.

بشار کو کیمیائی ہتھیار چلانے کا خمیازہ بھگتنا ہو گا: اولاند

احمد الجربا کا پیرس سے اپوزیشن کو اسلحہ کی فراہمی کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانسیسی صدر فرانسو اولاند نے کہا ہے کہ اگر شام میں نہتے شہریوں کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا تو اس کی تمام تر ذمہ داری شامی صدر بشارالاسد پرعائد ہو گی اور انہیں اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔ دوسری جانب شامی اپوزیشن لیڈر احمد الجربا نے فرانس اورعالمی برادری سے ایک مرتبہ پھر باغیوں کو اسلحہ فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق شامی اپوزیشن رہ نما احمد الجربا نے پیرس میں فرانسیسی صدر فرانسو اولاند سے ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد ایک مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فرانسیسی صدر کا کہنا تھا کہ شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے شواہد دوبارہ ملے تو اس کی ذمہ داری بشارالاسد اور ان کی حکومت پرعائد ہوگی۔ ایسی صورت میں ہم اسد رجیم کے خلاف سخت قانونی کارروائی کریں گے۔

مسٹر اولاند کا کہنا تھا کہ اب تک شامی حکومت باغیوں کے خلاف مہلک اور نہایت تباہ کن کیمیائی ہتھیار استعمال کرتا رہا ہے۔ ہم نے پہلے بھِ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی مذمت کی ہے اور آئندہ بھی اس کی مخالفت جاری رکھیں گے۔ اگر شام میں باغیوں کے خلاف کیمیائی ہتھیار دوبارہ اسعتمال کیے گئے تو ذمہ دار حکومت ہوگی۔ ایسی صورت میں دمشق حکومت پر مزید پابندیاں بھی لگ سکتی ہیں۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے شامی اپوزیشن رہ نما احمد الجربا نے فرانسیسی حکومت سے شامی باغیوں کی نمائندہ فوج "جیش الحر" کو اسلحہ اور جنگی سامان فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔