تین سالہ بچی کے سامنے والد کا بہیمانہ قتل

مانیٹرنگ کیمرے نے ہولناک منظر محفوظ کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برازیل میں ایک بیکری پر خریداری کے لیے آنے والے شہری کو ایک سترہ سالہ نشانچی نے اس کی تین سالہ معصوم بچی اور اہلیہ کی نظروں کے سامنے گولیاں مار کر ہلاک کر دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پولیس نے جائے واردات سے وقتی طور پر فرار میں کامیاب نوجوان کو حراست میں لے لیا۔ اس دلخراش واقعے کی ویڈیو سماجی رابطے کی مختلف ویب سائٹس پر تیزی سے پھیل رہی ہے۔

یہ واقعہ گذشتہ ہفتے کے روز برازیل کے صدرمقام سے پندرہ کلومیٹر دور سوپرا ڈیھنو کے مقام پر پیش آیا جہاں تیاگو انڈرے سانٹز سوزا نامی شہری اپنی تین سالہ بچی اور بیوی کے ہمراہ بیکری خریداری کے لیے آیا۔ سانٹر نے بچی کو اٹھا رکھا تھا۔ وہ جیسے ہی بچی کو زمین پر اتارنے کے لیے معمولی سا جھکا تو انتہائی کم فاصلے سے اسے ایک سائیکل لڑکے نے گولیوں سے بھون ڈالا۔ کئی گولیاں ٹیاگو کے سر اور جسم کے مختلف حصوں میں پیوست ہونے کے باعث سانٹز موقع پر ہی ہلاک ہو گیا۔

ننھی بچی کے سامنے اس کے والد کے بہیمانہ قتل کا یہ دل سوز واقعہ معصوم روح کے لیے بھی ناقابل برداشت تھا۔ ویڈیو میں اسے دم بہ خود اپنے منہ پرہاتھ رکھے چلاتے دیکھا جا سکتا ہے جبکہ مقتول کی اہلیہ بھی قریب ہی کھڑی آہ و بکا کر رہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق قاتل کی عمر سترہ سال بتائی گئی ہے۔ فائرنگ کے بعد وہ سائیکل پر موقع واردات سے فرار ہوگیا تھا تاہم پولیس نے اسے حراست میں لے لیا ہے تاہم ابھی تک پولیس قتل کا محرک جاننے میں کامیاب نہیں ہو سکی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں