.

ایران میں ارب پتی کاروباری شخصیت کو پھانسی

مہافرید امیر خسروی پر دھوکا دہی سے قرضہ لینے کا الزام تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے ارب پتی بزنس مین مہافرید امیر خسروی کو اسلامی اتقلاب کے بعد ملکی تاریخ کے سب سے مالیاتی فراڈ میں ملوث ہونے کی پاداش میں پھانسی دے دی گئی۔

سرکاری ٹی وی کے رپورٹ کے مطابق مہافرید المعروف امیر منصور آریا کو ہفتے کے روز تہران کے جنوب میں واقع ایوین جیل میں پھانسی دی گئی۔ مہافرید کو ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی توثیق کے بعد پھانسی کی سزا دی گئی۔

تین دیگر مجرموں کو اسی مقدمے میں پھانسی کی سزا سنائی گئی ہے، تاہم ان کی سزا پر ابھی عمل درآمد نہیں کیا گیا۔ سزا پانے والے افراد پر الزام تھا کہ انہوں نے جعلی دستاویزات استعمال کرتے ہوئے ایران کے ایک مرکزی بینک سے 2.6 ارب ڈالر قرضہ لیا جسے انہوں نے حکومت کی ملکیتی بعض کمپنیوں سمیت دیگر ادارے خریدنے کے لیے استعمال کیا۔

مقدمے کی سماعت کے دوران سابق صدر محمود احمدی نژاد کے دور میں سخت معاشی پالیسیوں کے باوجود ایران کے اعلی مناسب کی کرپشن کے بارے میں متعدد سوالات کھڑے کئے جاتے رہے۔