.

عبوری لیبی وزیر اعظم دہشت گردی کے خاتمے کے حامی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے عبوری وزیر اعظم عبداللہ الثنی نے دہشت گردی کے خاتمے کی کوششوں میں اپنی حمایت کا یقین دلاتے ہوئے واضح کیا ہے کہ اس اقدام کو ذاتی مفاد کے لیے استعمال نہیں کیا جانا چاہے۔

لیبی ٹی وی چینلز سے دکھائی جانے والی نیوز کانفرنس میں انہوں کہا کہ ملک میں قومی فوج اور پولیس تشکیل نہ دینے کی ذمہ داری نیشنل جنرل کانگرس [پارلیمان] پر عاید ہوتی ہے۔

عبداللہ الثنی نے ملک میں دہشت گردی کی لہر کے خلاف عوامی رد عمل کے طور پر ہونے والے مظاہروں کی تحسین کرتے ہوئے کہا کہ ان میں ملکی تعمیر کے مطالبات خوش آئند ہیں۔

درایں اثنا عبداللہ الثنی نے اس تاثر کی دو ٹوک الفاظ میں تردید کی کہ ان کے اور اخوان المسلمون کے حمایت یافتہ سابق وزیر اعظم احمد معیتیق کے درمیان کوئی کوارڈی نیشن موجود ہے۔

یاد رہے کہ عبوری وزیر اعظم کے دفتر سے جنرل حفتر کی زیر قیادت 'الکرامہ' آپریشن کی حمایت گذشتہ جمعہ شروع ہونے والی اس کارروائی کی سب سے بڑی سیاسی سرپرستی ہے۔ اس سے پہلے مختلف فوجی کونسلز، حکومتی وزرائ اور لیبیا کے متعدد قبائل جنرل حفتر کو اپنی حمایت کا یقین دلا چکے ہیں۔