.

اوباما صدر السیسی کے ساتھ کام کرنے کے خواہشمند

مصر میں سیاسی پابندیوں کے ماحول میں انتخاب پر اظہار تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ وہ نومنتخب مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے ساتھ مل کر کام کرنے کے خواہاں ہیں۔ اوباما نے اس امر کا اظہار السیسی کے صدر منتخب ہونے کے باضابطہ اعلان کے بعد کیا ہے۔

صدر اوباما جو ان دنوں یورپ کے دورے پر ہیں، اس دوران السیسی سے فون پر بات کرنے کا بھی ارادہ رکھتے ہیں۔

دوسری جانب وائٹ ہاوس نے مصر کے نئے صدر پر زور دیا ہے کہ وہ جمہوری اصلاحات کے اہتمام کے ساتھ ساتھ احتساب، شفافیت اور مصری عوام کے مسلمہ بنیادی انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے اقدامات کریں۔

وائٹ ہاوس کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی انتظامیہ کو خوشی ہے کہ عالمی مبصرین کو مصری انتخابی عمل کو دیکھنے کا موقع دیا گیا اور انتخابی عمل پرسکون انداز میں ممکن ہوا۔

تاہم وائٹ ہاوس نے مصر کے صدارتی انتخاب اور انتخابی مہم کے دوران سیاسی سرگرمیوں پر پابندیوں کے ماحول پر تشویش ظاہر کی ہے۔

واضح رہے ایک روز پہلے خادم حرمین الشریفین شاہ عبداللہ نے بھی عبدالفتاح السیسی کو صدر منتخب ہونے پر دلی مبارکباد دی ہے۔ جبکہ مصر میں عبدالفتاح کے حامیوں نے جشن فتح منایا ہے۔

اب صدر اوباما کے خیر سگالی بیان سے امریکا اور مصر کے درمیان تعلقات ایک مرتبہ پھر معمول پر آنے کا امکان پیدا ہو گیا، جو پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی فوج کے ہاتھوں برطرفی کے باعث قدرے متاثر ہو گئے تھے۔