.

امریکی ملکہ حُسن "طائی کوانڈو" کی ماہر نکلیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ملکہ حُسن کا تاج اپنے نام کرنے والی چوبیس سالہ حسینہ نینا سانچیز مارشل آرٹ "طائی کوانڈو" کے فن کی ماہر اور اس کی سابق کوچ نکلیں۔

واشنگٹن میں صحافیوں کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے نو منتخب ملکہ حسن نے ہلکے پھلکے انداز میں گفتگو کی۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا آپ نے مارشل آرٹ کا فن اس لیے سیکھا تاکہ ملکہ حسن کے مقابلوں میں اپنای تحفظ یقینی بنایا جا سکے؟ تو انہوں نے مسکراتے ہوئے مزاحیہ انداز میں کہا کہ "ہمیں ویسے ہی ہر ممکن تحفظ حاصل ہوتا ہے مگر مجھے تو اپنی صلاحیتوں پر مکمل بھروسہ ہے"۔

شانچیز بے بتایا کہ اس نے نہایت کم عمری میں مارشل آرٹ سیکھنا شروع کیا۔ جب وہ اس میں طاق ہو گئیں تو دوسروں کو سکھانے کا کام شروع کر دیا تھا۔ یوں وہ ماضی میں تائی کوانڈوں کی کوچ بھی رہ چکی ہیں۔


خیال رہے کہ امریکی ریاست لویزیانا کے شہر پٹون روگ میں منعقدہ مقابلہ حسن میں ملک بھر سے 51 حسیناؤں نے حصہ لیا۔ مقابلے میں روایتی ملبوسات کی نمائش، پیراکی سوٹ زیب تن کر اور سوال وجواب کے مرحلے سے بھی گذرنا ہوتا ہے۔

امریکا میں یہ مقابلہ سنہ 1952ء میں پہلی مرتبہ متعارف ہوا تھا۔ دو مرتبہ مقابلہ حسن امریکی رئیل اسٹیٹ کے شہنشاہ دونلڈ ٹرامپ کی جانب سے بھی منعقد کرائے گئے تھے۔