.

نائیجیریا: گرجا گھروں پر حملے ،54 افراد ہلاک

اسلامی جنگجو گروپ بوکو حرام پر عیسائیوں پر حملوں کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

نائیجیریا کے شمال مشرقی علاقے میں اسلامی جنگجوؤں نے عیسائی گرجا گھروں پر حملے کیے ہیں جن میں پچاس سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

شمال مشرقی ریاست بورنو کے ایک عہدے دار نے بتایا ہے کہ بوکو حرام سے تعلق رکھنے والے جنگجوؤں نے چار دیہات پر حملے کیے ہیں جن کے نتیجے میں چوّن افراد مارے گئے ہیں۔یہ چاروں دیہات قصبے شبوک کے آس پاس واقع ہیں جہاں بوکوحرام نے اپریل سے دوسو سے زیادہ اسکول طالبات کو یرغمال بنا رکھا ہے۔

عینی شاہدین کی اطلاع کے مطابق مسلح افراد نے اتوار کو گرجا گھروں پر دستی بم پھینکے تھے اور وہاں جانیں بچا کر بھاگنے والوں پرفائرنگ کی ہے۔شبوک کے ایک مقامی لیڈر نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا ہے کہ مقامی لوگوں نے سینتالیس لاشیں نکال لی ہیں اور مزید کی تلاش جاری ہے۔اس لیے مرنے والوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔

نائیجیرین حکومت کے ترجمان مائیک عمری نے مقامی لوگوں کے ان الزامات کو مسترد کردیا ہے کہ فوج باربار کے رابطہ کرنے کے باوجود انھیں بچانے کے لیے جائے وقوعہ پر نہیں آئی ہے۔ترجمان نے کہا کہ فوج اور فضائِیہ معمولی تاخیر کے بعد وہاں پہنچ گئی تھی۔جنگجوؤں کے حملوں کا نشانہ بننے والے چاروں دیہات ریاست بورنو میں واقع ہیں اور یہ علاقہ بوکو حرام کا گڑھ سمجھا جاتا ہے۔