سعودی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں تین حملہ آور ہلاک

دہشت گردوں کے حملے میں سعودی بارڈر سکیورٹی افسر اور ایک یمنی فوجی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب اور یمن کے درمیان واقع سرحد پر مسلح افراد نے ایک چوکی پر حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں سعودی بارڈر سکیورٹی فورس کا ایک افسر اور ایک یمنی فوجی جاں بحق ہوگیا ہے جبکہ جوابی کارروائی میں تین حملہ آور مارے گئے ہیں۔

العربیہ نیوز کو ذرائع نے بتایا ہے کہ جمعہ کی رات سرحدی چوکی پر چھے مسلح سعودی شہریوں نے حملہ کیا تھا۔ان میں سے ایک حملہ آور سعودی وزارت داخلہ کو مطلوب تھا۔العربیہ کو سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں ہلاک ہونے والے تینوں حملہ آوروں کی تصاویر مل گئی ہیں۔

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے سرکاری خبررساں ایجنسی ایس پی اے کو بتایا ہے کہ ''سکیورٹی فورسز کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ آوروں نے فائرنگ کی تھی جس کے نتیجے میں اس کا کمانڈر شہید ہوگیا۔سکیورٹی اہلکاروں نے حملہ آوروں پر جوابی فائرنگ کی اور فائرنگ کے اس تبادلے میں تین حملہ آور مارے گئے ہیں،ایک زخمی ہوگیا اور ایک کو گرفتار کر لیا گیا ہے''۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ ایک حملہ آور بھاگ کر قریبی عمارتوں میں کہیں چھپ گیا ہے اور اس کی تلاش کی جارہی ہے۔ادھر یمن کے سکیورٹی ذرائع نے بتایا ہے کہ القاعدہ کے مشتبہ مسلح افراد نے سرحد پر ایک فوجی چوکی پر حملہ کیا تھا جس میں ایک یمنی فوجی جاں بحق اور ایک زخمی ہوگیا ہے۔

یمنی ذرائع کے مطابق حملہ آوروں نے مشین گنوں اور راکٹ گرینیڈوں سے یمن کی سرحد کی جانب واقع وادیا پوسٹ پر حملہ کیا تھا جس کے بعد وہ فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔یہ علاقہ یمن کے جنوب مشرقی صوبے حضرموت میں واقع ہے۔اس صوبے کے پہاڑی علاقوں میں جنگجو تنظیم جزیرہ نما عرب میں القاعدہ کے جنگجوؤں نے اپنے ٹھکانے بنا رکھے ہیں۔

یمن کے مقامی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ جمعہ کو سرحدی چوکی پر حملہ القاعدہ ہی کی کارستانی ہے لیکن انھوں نے اس کی مزید وضاحت نہیں کی ہے۔واضح رہے کہ یمن اور سعودی عرب کے درمیان واقع سرحد سے دراندازوں کے علاوہ اسمگلر بھی آر پار آتے جاتے رہتے ہیں۔سعودی عرب یمن سے غیر قانونی دراندازی اور اسلحے کی اسمگلنگ کو روکنے کے لیے اپنی جنوبی سرحد پر تین میٹر( دس فٹ) اونچی باڑھ لگا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں