.

شامی کیمیائی ہتھیار بے اثر بنانے کا کام شروع

بین الاقوامی پانیوں میں یہ عمل دو ماہ جاری رہے گا: ترجمان پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی مال بردار بحری جہاز '''کیپ رے'' نے شامی کیمیائی ہتھیاروں کی آخری کھیپ کو بےاثر بنانے کا کام شروع کر دیا ہے۔ یہ کارروائی بین الاقوامی کھلے پانیوں میں کی جاری ہے۔

پینٹا گان کے ترجمان کرنل سٹیو وارن کے مطابق تلفی کا یہ عمل 600 میٹرک ٹن وزن کے برابر کیمیائی ہتھیاروں اور کیمیائی ہتھیاروں کے خام مواد پر مشتمل ہے۔ ترجمان کے مطابق خام مواد بھی کیمیائی ہتھیاروں کے طور پر استعمال ہو سکتا تھا۔

مزید تفصیل بتاتے ہوئے امریکی ترجمان نے کہا '' تلفی کے لیے فراہم اس کیمیائی مواد میں مسٹرڈ گیس، اور انسانی اعصابی نظام پر اثر انداز ہونے والے والی سارین گیس شامل ہے۔

واضح رہے یہ کیمیائی ہتھیار اسی ماہ جولائی کے شروع میں اٹلی کی بندرگاہ سے بین الاقوامی پانیوں میں امریکی جہاز کے ذریعے لائے گئے ہیں۔ جبکہ اسد رجیم نے اپنے کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی پر پچھلے سال الغوطہ میں کیمیائی ہتھیاروں سے ہونے والی 1400 ہلاکتوں کے بعد اتفاق کیا تھا۔

اس سلسلے میں پہلے امریکا اور روس کے درمیان ایک معاہدے پر اتفاق کیا گیا اور بعد ازاں سلامتی کونسل کی اس بارے میں قرار منظور ہوئی تو عالمی ادارے بھی اس تلفی منصوبے کا حصہ بن گئے۔

پینٹا گان کے ترجمان کرنل سٹیو وارن کے مطابق ان کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے عمل کے لیے ساٹھ دن درکار ہوں گے۔ بعد ازاں یہ بے ضرر بنایا گیا مواد فن لینڈ اور جرمنی پہنچایا جائے گا۔