.

فیفا ورلڈ کپ :جرمنی برازیل کو1-7 سے ہراکر فائنل میں!

سیمی فائنل میچ میں میزبان ملک کی ٹیم کو عبرت ناک شکست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برازیل میں کھیلے جارہے فیفا عالمی کپ فٹ بال ٹورنا منٹ کے پہلے سیمی فائنل میچ میں جرمنی کی ٹیم نے میزبان ٹیم کو ایک کے مقابلے میں سات گول سے شکست دے دی ہے اور وہ فائنل میں پہنچ گئی ہے۔

بیلو ہوریزونٹ میں کھیلے گئے اس میچ میں جرمن فٹ بال ٹیم کا کھیل کے آغاز ہی میں پلڑا بھاری تھا اور اس نے پہلے ہاف کے ابتدائی تیس منٹ میں برازیل کی ٹیم کو پے درپے پانچ گول کردیے تھے۔

جرمن ٹیم کے کھلاڑی تھامس میولر نے گیارھویں منٹ میں برازیل کی ٹیم کو پہلا گول کردیا تھا۔میروسلاو کلوز نے تئیسویں منٹ میں دوسرا گول کیا اور چوبیسویں اور چھبیسویں منٹ میں ٹونی کروس نے دو گول کردیے۔پہلے ہاف کے انتسیویں منٹ میں سامی خضریٰ نے جرمنی کی جانب پانچواں گول کردیا۔

اس طرح پہلا ہاف جب ختم ہوا تو جرمنی کو میزبان ٹیم کے مقابلے میں پانچ گول کی برتری حاصل تھی اور اس کی فتح یقینی نظرآرہی تھی۔کھیل کے دوسرے ہاف میں برازیلی ٹیم نے نسبتاً بہتر کھیل پیش کیا اور جرمن ٹیم کے جارحانہ حملوں کا دفاع کرتے ہوئے اس کو صرف دو گول کرنے دیے۔دوسرے ہاف کے انہترویں منٹ میں آندرے شرل نے چھٹا اور پھر اناسیویں منٹ میں جرمنی کی جانب سے ساتواں اور اپنا دوسرا گول کردیا۔برازیل کی جانب سے واحد گول کھیل کے اختتامی لمحات میں نویں منٹ میں ایمبوئبا آسکر نے کیا۔

جرمنی کے میروسلاو کلوز اس میچ میں عالمی کپ کے مقابلوں میں سب سے زیادہ گول کرنے والے کھلاڑی بن گئے ہیں اور انھوں نے برازیل کے مقبول اسٹرائیکر رونالڈو کا پندرہ گول کا ریکارڈ توڑ دیا ہے۔

اس اہم میچ میں برازیل کی ٹیم زخمی فارورڈ کھلاڑی نیمار اور کپتان تھیاگو سلوا کے بغیر کھیل رہی تھی۔نیمار کولمبیا کے خلاف کوارٹر فائنل میچ میں زخمی ہوگئے تھے اور تھیاگو کو پیلا کراڈ دکھایا گیا تھا جس کی وجہ سے وہ ایک میچ کے لیے باہر ہوگئے تھے۔ برازیل نے نیمار کی جگہ برنارڈ کو شامل کیا تھا۔

واضح رہے کہ برازِیل کی فٹ بال ٹیم 1975 ء کے بعد سے اب تک اپنی سرزمین پر کوئی بین الاقوامی میچ نہیں ہاری تھی۔لیکن وہ جرمنی کے خلاف سیمی فائنل میچ میں گول کرنے کا کوئی بھی ٹھوس موقع حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے اور اس نے جرمن ٹیم کے پے درپے گولوں کے بعد دفاعی کھیل پیش کرنے پر اکتفا کیا ہے۔اس کی ناکامی پر برازیلی شائقین فٹ بال کو سخت مایوسی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔