ڈرون آلات خریدنے والے حزب اللہ کے ایجنٹ بلیک لسٹ

جعلی ناموں سے شیعہ ملیشیا کے لیے خریداری کرتے تھے: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے لبنان کی شیعہ ملیشیا کے لیے ڈرون طیاروں کے پرزہ جات اور دیگر لوازمات کی خریداری کرنے والے ایجنٹس کو ''بلیک لسٹ'' کر دیا ہے۔

امریکا کی طرف سے اس سلسلے میں بیروت سے تعلق رکھنے والے ''سٹارز گروپ'' کو اپنے چین اور دبئی میں قائم دفاتر کے ذریعے ڈرون طیاروں کی تیاری کے لیے لوازمات اور ٹیکنالوجی کی خریداری سے روک دیا گیا ہے۔

امریکا کی طرف سے یہ فیصلہ ان اطلاعات کے بعد کیا گیا ہے کہ ''سٹارز گروپ'' نے امریکا، کینیڈا، یورپ کے ساتھ ساتھ بعض ایشیائی ممالک سے بھی ڈرون طیاروں کے انجن، کمیونیکیشن سسٹم اور دیگر الیکٹرانک آلات خریدے ہیں۔

اس لیے اس کمپنی، اس کے ذیلی ادراوں یا اس کے لیے خریداری میں کام آنے والے افراد کی خریداریوں پر پابندی لگا دی ہے۔ خصوصا اس کے ایجنٹس کامل محمد اور عیصام محمد نامی دو بھائیوں، ''سٹارز گروپ ''کے دو مینیجروں ایمن ابراہیم اور علی ضیاتر سمیت ایک خلیفہ نامی شخص پر بھی پابندی عاید کی ہے۔

خلیفہ کے نام سے مشہور شخص کے بارے میں کہا جاتا رہا ہے کہ وہ لبنانی تاجر ہے اور ''سٹار گروپ'' کے ساتھ کام کرتا ہے۔

ان افراد کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ یہ جعلی ناموں اور جعلی صارفین کے لیے خریداری کرتے ہیں جبکہ ان خریداریوں کا فائدہ حزب اللہ اٹھاتی ہے۔

امریکی دفتر خارجہ کی ترجمان جین پاسکی نے اس بارے میں بتایا '' ہم اپنے اتحادیوں سے بھی کہہ رہے ہیں کہ اس فیصلے پر عمل درآمد یقینی بنائیں۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں