ریاض کا او آئی سی سے وزرائے خارجہ اجلاس بلانے کا مطالبہ

"سلامتی کونسل فلسطینیوں کےخلاف اسرائیلی جنگی جرائم کا نوٹس لیے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی حکومت نے فلسطینی شہر غزہ کی پٹی پر قابض اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے سلامتی کونسل اور جنیوا میں قائم انسانی حقوق کونسل پر زور دیا ہے کہ وہ فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی جارحیت بند کرانے کے لیے اپنی ذمہ داریاں ادا کریں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق نائب وزیر اعظم اور ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس میں غزہ پر اسرائیلی بمباری کی شدید مذمت کی گئی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں میں معصوم شہریوں کا قتل عام کسی صورت میں برداشت نہیں کیا جا سکتا، لہٰذا ریاض عالمی سلامتی کونسل اور انسانی حقوق کونسل سے پر زور مطالبہ کرتا ہے کہ وہ چوتھے جنیوا معاہدے کے تحت فلسطینیوں کے خلاف کےخلاف اسرائیلی جنگی جرائم کی روک تھام کے لیے موثر کردار ادا کریں۔

کابینہ کے اجلاس کے اختتام پر جاری اعلامیے میں غزہ کی موجودہ صورتحال کے بارے میں اسلامی تعاون تنظیم کا وزراء خارجہ اجلاس بلانے کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا۔ اعلامیے میں فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم پر عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اور مسلمان ممالک پر زور دیا کہ وہ نہتے فلسطینی عوام پر اسرائیلی مظالم بند کرانے کے لیے اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کریں۔

خیال رہے کہ آٹھ جولائی سے غزہ کی پٹی پر جاری اسرائیلی فوج کے فضائی اور زمینی حملوں میں اب تک کم سے کم 200 فلسطینی شہید اور ڈیڑھ ہزار سے زیادہ زخمی ہو چکے ہیں۔ شہداء اور زخمیوں میں بھاری اکثریت خواتین اور بچوں کی بتائی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں