یوکرین: ملائیشیا کا مسافر طیارہ گر کر تباہ

طیارے میں 280 مسافر اور عملے کے 15 ارکان سوار تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ملائیشین ایئر لائنز کا ایک مسافر طیارہ مشرقی یوکرین میں جمعرات کے روز گر کر تباہ ہو گیا۔ بدقسمت طیارہ ایمسٹرڈم سے کوالالمپور جا رہا تھا۔

ملائیشین ایئر لائنز نے ٹوئٹر پر ایک پیغام میں کہا ہے کہ اُس کا جمعرات کو ایمسٹرڈم سے کوالالمپور جانے والے طیارے کے ساتھ رابطہ منقطع ہوگیا ہے۔ طیارے میں 280 مسافر اور عملے کے 15 ارکان سوار تھے۔

یوکرین کی وزارت داخلہ کے ایک اہل کار، اینتون گریشنکو نے کہا ہے کہ طیارہ زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کا نشانہ بنا۔

روس خبر رساں ادارے انٹر فیکس نے شہری ہوابازی سے منسلک ایک ذریعے کے حوالے سے خبر دی ہے کہ جہاز مشرقی یوکرین کے قصبے، شِنزنے کے قریب گر کر تباہ ہوا۔ یہ علاقہ روس کے ساتھ ملنے والی سرحد پر واقع ہے، جو ان دنوں یوکرینی حکومت کی افواج اور روس نواز علاحدگی پسندوں کے درمیان شدید لڑائی کا میدان بنا ہوا ہے۔

اِس سے قبل، اِسی ہفتے کے اوائل میں ایک جہاز گر کر تباہ ہوا تھا، جس میں 11 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ ابھی یہ واضح نہیں آیا طیارے پر کس نے حملہ کیا تھا؛ باغیوں نے اِس کا الزام یوکرین کی فضائی افواج پر لگایا تھا۔

ایسے میں جب جمعرات کو طیارے کے گر کر تباہ ہونے کی ابتدائی رپورٹیں موصول ہو رہی تھیں، علاحدگی پسندوں نے دعویٰ کیا کہ اُنھوں نے ’توریز‘ نامی قصبے کے قریب یوکرین کا ایک فوجی مال بردار جہاز (اے این 26) مار گرایا ہے، جو ’شِنزنے ‘ سے 10 کلومیٹر سے بھی کم فاصلے پر واقع ہے۔ پیر کو، یوکرینی فوج کا ایک جہاز (اے این 26) مشرقی یوکرین کے لہانسک علاقے میں مار گرایا گیا تھا۔

بدھ کے روز روس نواز علیحدگی پسندوں نے مشرقی یوکرین پر پرواز کرنے والے یوکرینی ایس یو 25 ساخت کے طیارے کو میزائل کا نشانہ بنانے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ اس جہاز کا پائلٹ بحفاظت زمین پر اتر گیا۔ بدھ ہی کے روز، یوکرین کی فوج نے بتایا کہ روسی جنگی جہازوں سے داغا گیا ایک میزائل یوکرین کے ایس یو 25 جہاز کو جا لگا، جو اُس وقت مشرقی یوکرین پر پرواز کر رہا تھا۔ تاہم، پائلٹ بحفاظت باہر کودنے میں کامیاب ہوا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں