.

لیبیا : باغیوں نے غیرمسلم فلپائنی کا سرقلم کردیا

مشرقی شہر بن غازی کے اسپتال سے مقتول کی سربریدہ لاش برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں باغیوں نے ایک فلپائنی تارک وطن کا اغوا کے سرقلم کردیا ہے۔فلپائن کے محکمہ امورِ خارجہ نے سوموار کو اس تعمیراتی ورکر کے قتل کی تصدیق کردی ہے۔

محکمہ امورِ خارجہ کے ترجمان چارلس جوز نے منگل کو ایک بیان میں بتایا ہے کہ اس فلپائنی کو ایک چیک پوائنت پر غیر مسلم ہونے کی بنا پر الگ کیا گیا تھا۔وہ جس گاڑی میں سوار تھا،اس کو روکا گیا۔اس میں تین افراد سوار تھے۔ایک لیبی ،ایک پاکستانی اور ایک فلپائنی۔

ترجمان کے بہ قول اس فلپائنی کو غیرمسلم ہونے کی بنا اغوا کرلیا گیا تھا۔پہلے اغوا کاروں نے اس کو رہا کرنے کے لیے ایک لاکھ ساٹھ ہزار ڈالرز تاوان طلب کیا تھا لیکن چار روز کے مذاکرات کے بعد ایک فون کال موصول ہوئی جس میں کہا گیا ہے کہ اس فلپائنی کی سربریدہ لاش مشرقی شہر بن غازی کے ایک اسپتال میں پڑی ہے۔

اس فلپائنی کو پندرہ جولائی کو مشرقی شہر بن غازی کے نواح سے اغوا کیا گیا تھا۔اس کے قتل کے بعد منیلا میں فلپائن کے محکمہ خارجہ امور نے اتوار کو ایک بیان جاری کیا تھا جس میں لیبیا میں روزگار کے سلسلہ میں مقیم تمام قریباً تیرہ ہزار فلپائنی ورکروں سے کہا گیا ہے کہ وہ فوراً وطن واپس آجائیں۔

بیان کے مطابق محکمہ خارجہ امور نے لیبیا میں سکیورٹی کی ابتر صورت حال اور لاقانونیت کے پیش نظر چوتھے درجے کا الرٹ جاری کیا ہے اور فلپائنی شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ لیبیا کے سفر سے گریز کریں۔