.

غزہ میں تباہی پھیلانے پر برازیل کا اسرائیل سے احتجاج

تل ابیب نے برازیل کو فٹ بال میچ ہارنے کا طعنہ دیکر غصہ ٹھنڈا کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برازیل نےغزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں معصوم شہریوں کے قتل عام پرساؤپالو میں متعین اسرائیلی سفیر کو دفتر خارجہ طلب کر کے سخت احتجاج کیا ہے۔

دوسری جانب اسرائیل نے جوابی حملہ کرتے ہوئے برازیل کو حال ہی میں ختم ہونے والے فٹ بال ورلڈ کپ مقابلوں میں جرمنی کے ہاتھوں شرمناک شکست کا طعنہ دے کر بدلہ چکانے کی ناکام کوشش کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اسرائیل کا کہنا ہے کہ ہمارے سفیر کو طلب کرکے غزہ میں فوجی کارروائی پر احتجاج کرنے والے برازیل کو یاد ہو گا کہ اس کی میزبانی میں ہونے والے فٹ بال ورلڈ کپ مقابلے میں جرمنی نے ان کی ٹیم کو 7-1 سے شرمناک شکست دی تھی۔

اسرائیلی وزارت خارجہ کے ترجمان یگال بالمور نے اخبار یروشلم پوسٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ برازیل میں ہمارے سفیر کی طلبی کے جواب میں اسرائیل کا رد عمل عالمی قانون کے مطابق ہے۔ یہ فٹبال میچ نہیں ہے۔ فٹ بال میں بھی جب دونوں ٹیموں کے گول برابر ہو جائیں تو میچ کو 'مناسب' قرار دیا جا سکتا ہے لیکن جب ایک ٹیم دوسری کو 'ایک اور سات' سے شکست دے تو اسے مناسب نہیں سمجھا جاتا۔ مجھے افسوس کے ساتھ یہ مثال دینا پڑی ہے۔ برازیل نے جو کام کیا ہے وہ عالمی قانون کے مطابق ہرگز نہیں ہے"۔

ادھر ساؤپالو یوئیل برینگ میں متعین اسرائیل قونصل جنرل نے اخبار ورلڈ اسٹریٹ جرنل سے گفتگو کرتے ہوئے برازیل کو "سفارتی بونا" قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی فوج کیا کر رہی ہے؟ برازیل کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے مطابق اسرائیلی سفیر کو صرف اس وجہ سے طلب نہیں کیا گیا کہ قونصل جنرل نے برازیل کو "بونا" قرار دیا بلکہ اسرائیلی سفارت کار اس سے قبل برازیل کو جرمنی کے ہاتھوں فٹبال ورلڈ کپ میں ایک کے مقابلے میں سات سکور سے شکست کا طعنہ بھی دے چکے ہیں۔ یہ طعنہ بھی ان کی دفتر خارجہ طلبی کا موجب بنا ہے۔

درایں اثناء برازیلین وزیر خارجہ البرٹو فیگیریڈو نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل نے فٹبال مقابلے میں سکشت کا توہین آمیز طعنہ دینے کے ساتھ ہمارے ملک کو "سفارتی بونا" قرار دیا، حالانکہ برازیل کے اقوام متحدہ کے تمام رکن ممالک کے ساتھ مضبوط سفارتی تعلقات قائم ہیں۔ دنیا میں دیر پا قیام امن کے حوالے سے برازیل کی مساعی سے کوئی انکار نہیں کر سکتا۔ اگر دنیا میں کہیں"سفارتی بونے" موجود ہیں تو کم سے کم برازیل ان میں شامل نہیں ہے، تاہم انہوں نے فٹبال مقابلے میں شکست کے طعنے پر کوئی مزید تبصرہ نہیں کیا۔

خیال رہے کہ برازیل میں یہودیوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔ اسرائیل اور برازیل کے درمیان بھی تاریخی تعلقات بھی قائم ہیں۔ دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی کشیدگی اس وقت پیدا ہوئی جب حال ہی میں 29 ملکوں نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں اسرائیل کے جنگی جرائم کی تحقیقات کے لیے ایک قرارد متفقہ طور پر منظور کی تھی۔ برازیل نے بھی اس قرارداد کی حمایت کی تھی۔