سعیدہ وارثی غزہ پر برطانوی پالیسی کے خلاف مستعفی

غزہ پر حکومت کی حمایت نہیں کر سکتی: ٹوئٹر پر پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانوی کابینہ کی رکن اور ٹوری پارٹی کی اہم رہنما سعیدہ وارثی نے غزہ پر حکومتی پالیسی سے اختلاف کی بنیاد پر استعفا دے دیا ہے۔

منگل کی صبح اپنے ایک ٹوئٹر پر دیے گئے پیغام میں سعیدہ وارثی نے کہا ''میں نے بڑے افسوس کے ساتھ آج صبح وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کو اپنا تحریری استعفا پیش کر دیا ہے، کہ میں غزہ پر حکومتی پالیسی کی مزید حمایت جاری نہیں رکھ سکتی ہوں۔

واضح رہے سعیدہ وارثی پاکستانی نژاد برطانوی شہری ہیں، وہ برطانوی پارلیمنٹ کے ایوان بالا کی رکن ہیں اور برطانوی کابینہ میں پہلی مسلمان خاتون وزیر تھیں۔ وہ 2010 میں پہلی مرتبہ اس وقت کابینہ کی رکن بنیں جب وہ ٹوری پارٹی کی چئیر پرسن تھیں، شروع میں وہ وزیر بے محکمہ تھیں۔ سعیدہ وارثی کی سکولنگ برطانیہ میں ہی ہوئی، وہ لیڈز یونیورسٹی سے لاء گریجوایٹ ہیں۔ اپنی وزارت کے دوران پاکستان کے دورے پر بھی آ چکی ہیں۔

برطانوی حکومت اسرائیل کی کٹر حامی ہے، جبکہ عوامی سطح پر اب اس کی پالیسی کے خلاف برطانیہ میں سخت ردعمل کا اظہار ہونے لگا ہے۔

پچھلے ماہ لندن کی سڑکوں پر ہزاروں کی تعداد میں برطانوی شہریوں نے اسرائیل کے خلاف احتجاج کر کے اپنی حکومت کی پالیسی کے بارے میں بیزاری ظاہر کی تھی۔

سعیدہ وارثی ان معنوں میں بہت سارے مرد سیاستدانوں اور حکمرانوں پر سبقت لے گئی ہیں جن کے مقابلے میں انہوں نے غزہ میں 2000 کے قریب شہادتوں پر بھر پور احتجاج کا انداز اختیار کیا ہے۔ ابھی اس خبر کی مزید تفصیلات آ رہی ہیں۔

لندن کے مئیر بورس جانسن نے سعیدہ وارثی کے مستعفی ہونے کو ایک پریشان کن خبر قرار دیتے ہوئے کہا '' امید ہے وہ جلد سے جلد کابینہ میں واپس آ جائیں گی۔''

درایں اثناء سوشل میڈیا پر سعیدہ وارثی کے استعفے کی خبر کو ہاتھوں ہاتھ لیا گیا ہے۔ غالب اکثریت نے اس فیصلے کی تحسین کی ہے ۔ جبکہ بعض نے تنقید بھی کی ہے۔ صرف ایک گھنٹے کے اندر اندر سوشل میڈیا پر استعفے کی خبر کو بہت بڑی تعداد میں لوگوں نے دیکھ لیا۔ اب تک ٹوئٹر پر یہ خبر پہلے چند توجہ پانے والے موضوعات میں شامل ہے۔

پاکستان میں بھی سعیدہ وارثی کے مستعفی ہونے کی خبر کوعوامی سطح پر بالعموم خوشی کے ساتھ لیا گیا ہے کہ انہوں نے جرائتمندانہ فیصلہ کیا ہے۔ واضح رہے پاکستان بھی ان ممالک میں شامل ہے جہاں غزہ پر اسرائیل کی دہشت گردانہ بمباری پر سخت غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں