.

امریکی طیارے شام پر پرواز نہ کریں: امریکی ایوی ایشن

انتہا پسندوں کے پاس طیارہ شکن ہتھیار موجود ہیں: ایف اے اے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے ایوی ایشن سے متعلق وفاقی ادارے فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن نے تمام امریکی فضائی کمپنیوں کو ہدایت جاری کی ہے کہ شام کی فضاوں میں پرواز سے گریز کریں۔ جاری کردہ ہدایت میں اس احتیاط کی وجہ شام میں لڑائی کی تازہ صورت حال میں خطرات کا مزید بڑھ جانا بتایا گیا ہے۔

ایف اے اے نے اس پہلے بھی امریکی جہازوں کو شام کے اوپر اڑنے سے منع کیا تھا۔ تاہم حکام کے مطابق تازہ ہدایت میں کہا گیا ہے فضائی کمپنیاں شام کی طرف پرواز سے پہلے ایف اے اے سے ضرور رابطہ کریں۔

حکام کا جاری کردہ بیان میں کہنا ہے کہ تازہ الرٹ جاری کرنے کی فوری وجہ شام کی صورت حال کے خطرناک تر ہونے اور امریکی طیاروں کے لیے بطور خاص خطرات کی اطلاعات ہیں۔ واضح رہے شام کی چوتھے سال میں داخل ہو چکی خانہ جنگی میں اب تک ایک لاکھ ستر ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں ۔

ان دنوں اسلامی عسکریت پسند تنظیم داعش نے شام کے بعض علاقوں کو قبضے میں کر لیا ہے۔ جس سے آس پاس کے ممالک کے لیے بھی خطرات بڑھ گئے ہیں۔ اطلاعات ہیں عسکریت پسندوں کے پاس طیارہ شکن ہتھیار بھی موجود ہیں۔ ایف اے اے کے مطابق یہ الرٹ امریکا کے تمام رجسٹرڈ طیاروں کے لیے ہے۔

یہ اطلاعات بھی ہیں کہ انتہا پسندوں نے طیارہ شکن ہتھیار ملک کے مختلف حصوں میں نصب کر رکھے ہیں۔ اسی ماہ کے شروع میں ایف اے اے نے عراق کے حوالے سے بھی اپنی فضائی کمپنیوں کو اسی نوعیت کی ہدایت جاری کی تھی۔ عراق میں امریکی فضائیہ داعش کے ٹھکانوں کو بھی تقریبا دو ہفتوں سے نشانہ بنا رہی ہے۔

دوسری جانب داعش کے عسکریت پسند جنہوں عراق کے کئی حصوں پر قبضہ کر لیا ہے انتباہ کر رکھا ہے کہ اگر امریکا نے داعش پر حملے کیے تو وہ امریکی اہداف کو بھی ہر جگہ نشانہ بنائیں گے۔ داعش کا کہنا ہے '' تم سب کو لہو میں ڈبو دیں گے۔ '' اس سے پہلے عراق پر امریکی قبضے کے دوران بھی امریکیوں کے سر قلم کرنے کی ویڈیوز سامنے آ چکی ہیں۔

امریکی صدر اوباما نے پیر کے روز اپنی ایک نیوز کانرنس کے دوران کہا تھا ''داعش عراق اور پورے خطے کے لیے خطرہ ہے۔''