مصر کی لیبیا میں شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصری صدر ریٹائرڈ فیلڈ مارشل ریٹائرڈ عبدالفتاح السیسی نے کہا ہے کہ ان کی فوج لیبیا میں اسلامی عسکریت پسندوں کے خلاف کسی بھی فضائی یا زمینی آپریشن میں حصہ نہیں لے رہی ہیں۔

ایوان صدر میں اخبارات کے مدیران کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے صدر السیسی کا کہنا تھا کہ "ابھی تک ہماری فوج نے بیرون ملک کسی آپریشن میں حصہ نہیں لیا ہے۔ لیبیا کی فضائی حدود میں مصری فوج کا کوئی طیارہ نہیں گیا ہے اور نہ ہی فوج نے لیبیا کی حدود میں اسلامی عسکریت پسندوں کے خلاف کوئی کوئی کارروائی کی ہے"۔

صدر السیسی کا کہنا تھا کہ ان کا ملک پڑوسی ممالک کی سلامتی اور خودمختاری کا خواہاں ہے۔ لیبیا میں امن اور سیاسی استحکام کے قیام کے لیے الجزائر، تیونس اور دوسرے ملکوں کے ساتھ صلاح مشورہ بھی جاری ہے۔ تاہم طرابلس میں فوجی مداخلت کا کوئی امکان نہیں ہے۔

قبل ازیں اخبارات میں یہ خبریں شائع ہوئی تھیں کہ مصری فوج نے لیبیا کے دارالحکومت طرابلس کے بین لاقوامی ہوائی اڈے پر قبضہ کرنے والی اسلامی ملیشیا کے ٹھکانوں پر فضائی حملے کیے ہیں، تاہم مصری وزارت خارجہ نے بھی ان خبروں کو بے بنیاد قرار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں