امریکی صحافی رہائی کے بعد واپس گھر پہنچ گیا

پیٹر کرٹس تل ابیب کے راستے امریکا پہنچا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں انتہا پسندوں کے ہاتھوں گرفتار ہونے والا امریکی صحافی رہا ہونے کے دو دن بعد واپس امریکا پہنچ گیا ہے۔

پنتالیس سالہ پیٹر تھیوکرٹس امریکی صحافی کے اہل خانہ نے بوسٹن سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ کرٹس تل ابیب کے راستے نیو یارک پہنچ گیا ہے۔ جہاں سے بعد ازاں اپنی والدہ نینسی کرٹس کے ہمراہ بوسٹن پہنچ گیا ہے۔

کرٹس نے اپنی رہائی پر امریکی حکام کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس کی رہائی کے لیے غیر معمولی کوششیں کیں۔ واضح رہے ایک ہفتہ پہلے ایک امریکی صحافی جیمز فولے کو شام میں انتہا پسندوں نے ہلاک کر دیا تھا۔

جیمز فولے کو 2012 میں اس وقت اغواء کیا گیا تھا جب وہ شامی خانہ جگی کی کوریج کے لیے شام میں موجود تھا۔ اس کی ہلاکت کی ویڈیو داعش نے اپ لوڈ کی تھی۔

رہائی پانے والے امریکی صحافی پیٹر کرٹس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اسے النصرہ فرنٹ نے حراست میں لیا تھا۔ خیال رہے النصرہ فرنٹ سنی انتہا پسندوں کا گروپ ہے، جو شامی رجیم کے خلاف سرگرم ہے

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں