.

حوثیوں نے یمن میں سول نافرمانی کی دھمکی دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حکومت کے خلاف بہ طور احتجاج دارالحکومت کا گھیرائو کرنے والے حوثی شیعہ شدت پسندوں نے صنعاء حکومت کے خلاف سول نافرمانی کی تحریک چلانے کی دھمکی دی ہے۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی 'رائیٹرز' کے مطابق حوثی قبائل کے سربراہ عبدالملک حوثی نے گذشتہ روز دارالحکومت صنعاء میں اپنے حامیوں ‌کے ایک مجمع سے خطاب میں کہا کہ ان کے مطالبات تسلیم نہ کیے گئے تو وہ حکومت کے خلاف سول نافرنامی کی تحریک چلائیں گے۔ انہو‌ں نے اپنے حامیوں سے سول نافرمانی کی کال کی حمایت کا بھی وعدہ لیا۔

خیال ہے کہ شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والے حوثی قبیلے کے لوگوں نے دو ہفتے قبل دارالحکومت صنعاء کی جانب ملین مارچ کیا تھا۔ ہزاروں کی تعداد میں حوثیوں نے صنعاء میں وزارت داخلہ کے ہیڈ کواٹرز کے قریب دھرنا دے رکھا ہے۔ ان کا مطالبہ ہے کہ حکومت جنوبی یمن میں ‌حوثی اکثریتی علاقے کو زیادہ سے زیادہ خودمختاری دے۔ نیز ملک میں مہنگائی کے خاتمے کے لیے موثر اقدمات کے ساتھ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لیا جائے۔

درایں اثناء گذشتہ جمعہ کو سلامتی کونسل نے یمن میں جاری سیاسی کشیدگی پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حوثیوں‌ پر زور دیا تھا کہ وہ حکومت کے خلاف پرتشدد کارروائیاں بند کریں۔ سلامتی کونسل نے خبردار کیا کہ یمن میں کشیدگی برقرار رہی تو اس کے نتیجے میں غیر ملکی مداخلت کی راہ ہموار ہو سکتی ہے۔