.

یمنی فورسز اور حوثیوں میں جھڑپیں ،7 افراد ہلاک

حوثی مظاہرین پر فائرنگ کے بعد صنعا کے پولیس سربراہ برطرف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت صنعا میں سکیورٹی فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان جھڑپوں میں سات افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔تشدد کے اس واقعہ کے بعد یمنی حکومت نے صنعا پولیس کے ڈائریکٹر جنرل کو برطرف کردیا ہے۔

العربیہ نیوز چینل کے نمائندے کی اطلاع کے مطابق منگل کو صنعا میں کابینہ کی عمارت کے سامنے سرکاری محافظوں اور حوثی باغیوں کے درمیان جھڑپیں ہوئی ہیں۔عینی شاہدین اور میڈیکل ذرائع نے بتایا ہے کہ پولیس اہلکاروں نے کابینہ کی عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کرنے والے مظاہرین کو پہلے اشک آور گیس سے منتشر کرنے کی کوشش کی لیکن جب وہ اس میں ناکام رہے تو انھوں نے مظاہرین پر فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں سات افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

حوثی مظاہرین کے ایک ترجمان خالد المدنی کا کہنا ہے کہ جھڑپوں میں بیسیوں افراد زخمی ہوئے ہیں۔سکیورٹی ذرائع نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ حوثی باغیوں نے کابینہ کی عمارت پر دھاوا بولا تھا اور انھوں نے زبردستی اندر داخل ہونے کی کوشش تھی۔سکیورٹی فورسز نے اپنی ذمے داری نبھاتے ہوئے انھیں روکنے کی کوشش کی ہے۔

دارالحکومت کے جنوب میں واقع ایک داخلی راستے پر مسلح حوثی باغیوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہے اور ایک عام شہری گولی لگنے سے ہلاک ہوگیا ہے۔حوثی مظاہرین نے اتوار سے صنعا شہر سے ہوائی اڈے کی جانب جانے والی شاہراہ پر خیمے نصب کر رکھے ہیں اوراس شاہراہ کو سیمنٹ کے بلاک لگا کر بند کردیا ہے۔انھوں نے بجلی اور ٹیلی مواصلات کی وزارتوں کی جانب جانے والے راستے کو بھی بند کررکھا ہے۔

حوثی باغی 18 اگست سے صنعا کے نواح میں حکومت کے خلاف احتجاج کررہے ہیں۔وہ حکومت پر بدعنوانیوں کے الزامات عاید کر رہے ہیں ،اس سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کررہے ہیں اور انھوں نے صدر عبد ربہ ہادی منصور کی جانب سے نئے وزیراعظم کی نامزدگی کی پیش کش اور ایندھن پر دیے جانے والے زر تلافی کی بحالی کے فیصلے کو بھی مسترد کردیا ہے۔

ادھر شمالی صوبہ الجوف میں گذشتہ تین روز سے مسلح حوثی باغیوں اور حکومت کے اتحادی قبائل کے درمیان لڑائی جاری ہے اور یمنی فوج بھی باغیوں پر طیاروں سے بمباری کررہی ہے۔

مشرقی صوبہ حضرموت میں القاعدہ کے جنگجوؤں نے منگل کو فوج کے ایک چیک پوائنٹ پر بارود سے بھری کار دھماکے سے اڑا دی ہے۔اس کے بعد حملہ آوروں اور فوجیوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں تین فوجی اور دس جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔