.

اسرائیل: دو سو مسیحی خاندانوں کا شہریت کے لیے اندراج

قدیمی مسیحی پہلے عرب شناخت کے طور پر رجسٹرڈ تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزارت داخلہ نے ایک ایسے حکم نامے پر دستخط کیے ہیں، جس کے تحت دوسو مسیحی خاندانوں کو اسرائیل کی الگ سے شہریت دے دی گئی ہے۔

اسرائیلی اخبار 'ہارتس' کی رپورٹ کے مطابق اس سے پہلے ان مسیحی خاندانوں کا عربوں کے طور پر وزارت داخلہ نے اندراج کر رکھا تھا۔ لیکن اب ارامیز کے طور پر اندراج کیا جائے گا۔

خیال رہے یہ مسیحی خاندان خود کو خطے کے قدیمی باشندوں کے طور پر متعارف کراتے ہیں۔ انہیں لیکوڈ پارٹی کی زیر قیادت ایک الگ قومیت کے طور پر رجسٹر کرنے کے لیے ماہ فروری سے کوشش کی جا رہی تھی۔

یروشلم پوسٹ کے مطابق اس منفرد شناخت کے حامل مسیحیوں کو روزگار کے یکساں موقع فراہم کرنے کے لیے قائم کمیٹی میں بھی نمائندگی ملے گی۔