.

لیبیا:کابینہ کی پارلیمان کے سامنے حلف برداری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے وزیراعظم عبداللہ الثنی کی دس ارکان پر مشتمل نئی کابینہ نے مشرقی شہر طبرق میں پارلیمان کے سامنے حلف اٹھا لیا ہے۔

عبداللہ الثنی کی حکومت کا طبرق سے باہر کوئی اثر ورسوخ نہیں ہے جبکہ دارالحکومت طرابلس میں اسلامی جماعتوں کے اتحادی جنگجوؤں کا قبضہ ہے۔انھوں نے وہاں ایک متوازی حکومت قائم کررکھی ہے اور انھوں نے اپنے طور پر سابقہ پارلیمان کو بحال کردیا ہے۔

وزیراعظم عبداللہ الثنی کی کابینہ کی حلف برداری سے صرف ایک روز قبل ان کی پارلیمان کے سربراہ عجیلہ صالح عیسیٰ نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تقریر کی تھی۔انھوں نے عالمی طاقتوں پر زوردیا تھا کہ وہ اسلامی جنگجوؤں کو شکست دینے کے لیے لیبی حکومت کی مدد کریں۔

صالح عیسیٰ نے کہا کہ ''دنیا کا لیبیا میں دہشت گردی سے آنکھیں موند لینا ناقابل قبول ہے''۔انھوں نے عالمی طاقتوں سے مطالبہ کیا کہ وہ حکومت کے خلاف اسلامی جنگجوؤں کے خلاف پابندیاں عاید کریں۔