.

داعش کے ٹھکانوں پر اتحادی فوج کے 48 گھنٹوں میں 06 حملے

حملوں میں سعودی عرب اور یو اے ای طیاروں نے حصہ لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں اور عراق میں سرگرم اسلامی شدت پسند تنظیم دولت اسلامی "داعش" کے ٹھکانوں پر اتحادی فوج کے فضائی حملے بدستور جاری ہیں۔ گذشتہ دو روز میں سعودی عرب، امریکا اور متحدہ عرب امارات کے جنگی طیاروں نے شام میں داعش کے ٹھکانوں پر 06 حملے کیے اور شدت پسند گروپ کو بھای جانی اور مالی نقصان سے دوچار کیا گیا ہے۔

امریکی سینٹرل کمانڈ کے مشرق وسطیٰ اور وسطیٰ ایشیا مرکز "سینٹ کام" کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ اتحادی فوجوں نے جمعرات اور جمعہ کے روز شام میں داعش کے ٹھکانوں پر چھ فضائی حملے کیے۔
بیان میں بتایا گیا ہے کہ شام کے شمال مشرقی شہر حسکہ میں داعشی جنگجوؤں کے مختلف مراکز پر بمباری کر کے انہیں تباہ کر دیا گیا۔ مشرقی شہر دیرالزور میں فضائی حملے میں داعش کے دو ٹینک تباہ کر دیے گئے۔

شمالی شہر الرقہ میں داعشی جہادیوں کے ایک مالیاتی مرکز کو بمباری سے تباہ کیا گیا۔ اس کے علاقے میں داعش کا ایک تربیتی مرکز بھی تباہ کیا گیا ہے۔ شمال مشرقی شہر حلب میں داعش کے زیر استعمال ایک رہائشی عمارت کو نشانہ بنایا گیا۔ الرقہ میں داعش کے توپخانے پر بمباری کی گئی تاہم نشانہ خطا ہونے سے توپخانے کو کوئی زیادہ نقصان پہنچ سکا ہے۔

سینٹ کام کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ تازہ فضائی حملوں میں امریکی فوج کے علاوہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے جنگی طیاروں نے بھی حصہ لیا۔

ادھر عراق میں بھی اتحادی فوج نے سرحدہ علاقے السنجار میں داعش کے ٹھکانوں پر بمباری کرکے دو گاڑیوں کوتباہ کردیا۔ فلوجہ میں بھی بمباری میں دو فوجی گاڑیوں کی تباہی کی اطلاعات ہیں۔ عراق میں بمباری میں بغیر پائلٹ کے طیارں نے بھی حصہ لیا۔