.

دو ملین سے زاید حجاج رمی جمرات کے لیے منی کی جانب رواں دواں

آج کے روز قربانی، حلق اور طواف وداع بھی ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دُنیا کے مختلف خطوں سے اپنے پروردگار کی رضا اوراس کی خوشنودی کے حصول کی خاطر حجاز مقدس آئے لاکھوں فرزندان توحید میدان عرفات میں وقوف عرفہ کے بعد مزدلفہ میں کنکریاں جمع کرتے ہوئے دوبارہ منیٰ کی جانب گامزن ہو گئے ہیں جہاں وہ رمی جمرات (شیطان کو کنکریاں مارنے کا فریضہ) ادا کریں گے۔

عرفات اور مزدلفہ سے حجاج کرامی 10 ذی الحج کی نماز فجر کے بعد جمرہ عقبہ کی جانب روانہ ہوئے۔ قبل ازیں رات بھر وہ میدان عرفات اور مزدلفہ میں اپنے پروردگار کی تسبیح و تہلیل اور عبادت میں مشغول رہے۔ نو ذی الحج کو عرفات میں آمد کے بعد حجاج نے حسب دستور ظہر اور عصر کی نمازیں قصر کرتے ہوئے ساتھ ایک اذان اور دو اقامتوں کے ساتھ ادا کیں اورخطبہ سماعت کیا۔

آج دس ذی الحج کو رمی جمرات سے فراغت کے سُنتِ ابراہیمی کو تازہ کرتے ہوئے جانوروں کی قربانی دیں گے۔ اس کے بعد حلق کرائیں گے، طواف کعبہ کریں گے اور صفا اور مروہ کے درمیان سعی کریں گے۔ یہاں سے ایام تشریق کا آغاز ہو گا اور حجاج کرام ایک بار پھر رمی جمرات صغریٰ، وسطیٰ اور کبری کے لیے کی جانب روانہ ہوں گے۔