.

فرانس کی شام، ترکی کے درمیان بفر زون کی حمایت

صدر اولاندے نے طیب ایردوآن سے فون پر حمایت کا اظہار کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے صدر اولاندے نے ترکی کی طرف سے پیش کردہ اس تجویز کی حمایت کی ہے کہ شام اور ترکی کے درمیان ایک محفوظ زون بنایا جائے تاکہ اتحادیوں اور داعش کے درمیان لڑائی کے دوران نقل مکانی کرنے والوں کی بہ احسن میزبانی کی جا سکے۔

اس امر کی حمایت فرانس کے صدر نے ترک ہم منصب طیب ایردوآن سے فون پر بات کرتے ہوئے کیا ہے۔ اس سلسلے میں فرانس کے ایوان صدر کی طرف سے ایک بیان بھی جاری کیا گیا ہے۔

واضح رہے داعش کے انتہا پسند ترکی اور شام کی سرحد پر واقع قصبے کوبانی پر قبضے کے لیے نئی حکمت عملی کے طور پر ایک مرتبہ پھر قصبے کے مشرقی حصے کو نشانہ بنائے ہوئے ہیں۔

اس قصبے پر داعش کی حالیہ ہفتوں سے جاری قبضے کی کوشش کے بعد ایک لاکھ ساٹھ ہزار کے قریب لوگ قصبے سے نقل مکانی کر چکے ہیں۔ جبکہ مجموعی طور پر تقریبا دولاکھ کردوں نے اس علاقے سے نقل مکانی کی ہے۔ اس وجہ سے ترکی بطورخاص زیر دباو ہے۔

ترکی کے صدر طیب ایردوآن عالمی اتحادیوں کی فضائی کارروائیوں کے ساتھ ساتھ مزید اقدامات پر بھی زور دیتے ہیں جن میں سے ایک ترکی اور شام کے درمیان محفوظ زون بنانے کے حوالے سے ہے۔