.

بغداد:کار بم دھماکا ،12 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد میں شیعہ اکثریتی آبادی کے علاقے صدر سٹی میں ایک کار بم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں بارہ افراد ہلاک اور تیس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

عراقی حکام کے مطابق صدر سٹی میں ایک مصروف شاہراہ پر واقع کیفے کے نزدیک کار بم دھماکا ہوا ہے۔اس میں تینتیس افراد زخمی ہوئے ہیں اور انھیں اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے۔اس علاقے میں قریباً ہر ہفتے کوئی نہ کوئی بم دھماکا یا خودکش بم حملہ ہوتا ہے۔

فوری طور پر کسی گروپ نے اس خودکش بم حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے لیکن قبل ازیں القاعدہ سے وابستہ جنگجو تنظیم دولت اسلامی عراق و شام (داعش) پر اس طرح کے حملوں کے الزامات عاید کیے جاتے رہے ہیں۔اقوام متحدہ کے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق ستمبر میں عراق بھر میں تشدد کے واقعات میں ایک ہزار ایک سو دس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

ادھر عراق کے شمالی علاقوں میں امریکا کے اتحادی طیاروں کی دولت اسلامی (داعش) کے جنگجوؤں پر بمباری جاری ہے۔داعش نے جون سے عراق کے پانچ مغربی اور شمال مغربی صوبوں کے بیشتر علاقوں میں اپنی عمل داری قائم کررکھی ہے۔انھوں نے عراقی سکیورٹی فورسز اور ان کی اتحادی شیعہ ملیشیاؤں کو لڑائی کے بعد ان علاقوں سے مار بھگایا تھا اور اب امریکا کے فضائی حملوں کی مدد سے عراقی فورسز داعش کے زیر قبضہ علاقوں کو واپس لینے کی کوشش کر رہی ہیں۔