.

بنغازی میں عارضی جنگ بندی کی جائے: ہلال احمر

متحارب فریق شہریوں کو محفوظ علاقے کی طرف جانے کی اجازت دیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں ہلال احمر نے بنغازی کے متحارب فریقوں سے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کی اپیل کی ہے۔

یہ اپیل بنغازی کے جنگ زدہ علاقوں میں پھنسے شہریوں کو بحفاظت نکلنے کا موقع دینے کے لیے کی گئی ہے، تاکہ رہائشی لوگ خصوصا خواتین اور بچے محفوظ مقامات پر منتقل ہو سکیں۔

بنغازی میں اسلامی عسکریت پسندوں اور حکومتی حمایت یافتہ فورسز بشمول مقامی نوجوانوں کے درمیان لڑائی جاری ہے۔ اس تازہ لڑائی کی وجہ سے حکومتی دفاتر، ادارے، بنک اور مارکیٹیوں سے لے کر متعدد ہسپتال تک بند ہو چکے ہیں۔ شہر میں لڑائی نے عوامی زندگی مخدوش کر دی ہے۔

لیبیا کے اس دوسرے بڑے شہر میں بمبار طیارے اسلام پسندوں پر بمباری کر کے ان کے ٹھکانے تباہ کرنے کی کوشش میں ہیں۔ طبی ذرائع کے مطابق دو طرفہ لڑائی کے دوران دو دنوں میں کم از کم سترہ لوگ ہلاک ہوئے ہیں۔

بنغازی ایک بندرگاہی شہر ہونے کی وجہ سے غیر معمولی اہمیت کا حامل ہے۔ اس شہر میں تیل کی خرید و فروخت اور ترسیل کے کئی ادارے کام کرتے ہیں ۔ ان ادروں کو بھی کافی مشکلات کا سامنا ہے۔

واضح رہے معمر قذافی کی حکومت کے خاتمے کے بعد سے اس شہر میں عسکریت پسندوں کے اثرات مسلسل چلے آ رہے ہیں ۔

سرکاری فوج اپنے ایک سابق جرنیل کے ساتھ مل کر بدھ کے روز سے شہر کو اسلام پسندوں سے خالی کرانے کے لیے آپریشن شروع کیے ہوئے ہے۔ اس سے پہلے انصار الشرعیہ اور بعض اسلامی گروپوں نے کئی فوجی کیمپ بند اور ائیر پورٹ بند کرا دیا تھا۔

ہلال احمر بنغازی کے سربراہ نے کہا '' ہم تمام فریقوں پر زور دیتے ہیں کہ جنگ بندی کریں، خواہ ایک گھنتے کے لیے ہی کریں تاکہ جنگ زدہ خاندان محفوظ جگہوں کے لیے نکل سکیں۔ انہوں نے مزید کہا اس حوالے سے دسیوں شہریوں کی طرف سے اپیلیں بھی آئی ہیں کہ انہیں بچایا جائے۔''