.

امریکی بوئنگ کمپنی، ایران کے ساتھ 35 سال بعد ڈیل

ایران کو نیوی گیشن چارٹس اور نقشے فروخت کیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی طیارہ ساز بوئنگ کمپنی نے 35 سال کے طویل عرصے کے بعد ایران کے ساتھ ایک کاروباری ڈیل کی ہے۔ اس ڈیل کی کل مالیت بوئنگ کمپنی کی رپورٹ میں ایک لاکھ بیس ہزار ڈالر بتائی گئی ہے۔ جس پر رپورٹ کے مطابق کمپنی کو 12 ہزار ڈالر کا منافع ہوا ہے۔

امریکا نے حالیہ فیصلے کے مطابق بوئنگ کمپنی کو محدود حد تک ایران کو طیاروں کے فاضل پرزہ جات اور اس نوعیت کے دیگر لوازمات کی فروخت کی اجازت دی ہے۔ تاہم بوئنگ کمپنی کو اب بھی ایران کو طیارے فروخت کرنے کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔

ایران کے ساتھ تجارتی معاملات پر امریکا کی طرف سے 1979 سے پابندیاں عاید ہیں۔ البتہ 24 نومبر 2013 کو ایران کے ساتھ ابتدائی جوہری معاہدے کے بعد ماہ اپریل میں امریکا نے بوئنگ کمپنی کو ان اشیاء کی فروخت کے لیے لائسنس جاری کیا تھا۔

اقتصادی پابندیوں میں جزوی کمی سے ایران کو جزوی ریلیف ملا ہے۔ بوئنگ کمپنی کو یہ لائسنس امریکی وزارت خزانہ کی طرف سے جاری کیا گیا ہے۔ کمپنی کے مطابق اس نے ایران کے ساتھ طویل عرصے کے بعد یہ چھوٹی سی ڈیل 2014 کے آخری چار ماہ کے دوران مکمل کی ہے۔

اس ڈیل کے تحت ایران کو نیوی گیشن سے متعلق بعض چارٹ اور نقشہ جات فروخت کیے گئے ہیں۔