.

اسرائیل، امریکا سے ’’ایف۔35‘‘ لڑاکا طیارے خریدے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے امریکا سے جدید نوعیت کے 20 ’’ایف 35‘‘ جنگی جہاز خریدنے کا معاہدہ کیا ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان دفاعی تعاون کے سمجھوتے کی منظوری حال ہی میں دی گئی۔ معاہدے پر امریکی وزیر دفاع چک ہیگل اور ان کے اسرائیلی ہم منصب موشے یعلون نے دستخط کیے۔

اسرائیل سے شائع ہونے والے عبرانی اخبار ’’ہارٹز‘‘ کے مطابق معاہدے کے تحت امریکا کم سے کم بیس ’’ایف 35 ‘‘طیارے تل ابیب کو فراہم کرے گا۔

درایں اثنا ایک دوسرے انگریزی اخبار ’’یروشلم پوسٹ‘‘ نے بتایا ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان دفاعی تعاون کا معاہدہ چند روز قبل طے پایا۔ رپورٹ کے مطابق اسرائیل نے سنہ 2012ء میں امریکا کے ساتھ دو ارب 75 کروڑ ڈالرکا ایک دفاعی معاہدہ کیا تھا جس کے تحت امریکا نے اسرائیل کو 19 ایف 35 جنگی طیارے مہیا کرنا تھے۔ اسرائیل امریکا سے ایف 35 طرز کے 75 طیارے خرید کرنے کے لیے پرعزم ہے۔

یاد رہے کہ اسرائیل اور امریکی وزراء دفاع کے درمیان ملاقات گذشتہ ہفتے واشنگٹن میں ہوئی تھی۔ اس ملاقات کی ابتدائی خبر میں جنگی طیاروں کے معاہدے کا کوئی ذکر نہیں تھا تاہم اب اسرائیل کے کئی قومی اخبارات نے خفیہ ڈیل کی تصدیق کی ہے۔ رپورٹس کے مطابق امریکا ایف 35 جنگی طیاروں کی پہلی کھیپ 2016 اور دوسری سنہ 2019ء میں اسرائیل کو دے گا۔

خیال رہے کہ ایف 35 جنگی طیارے فضاء میں اپنی تیز رفتاری کے ساتھ ساتھ راڈار پر نظر نہ آنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ امریکا نے تکنیکی مسائل اور بجٹ کی قلت کے باعث سات سال سے ان طیاروں کی تیاری روک دی تھی۔

امریکا نے مجموعی طور پر تین کھرب 90 ارب ڈالر کی مالیت سے 2433 ایف۔35 جنگی جہاز بنانے کا منصوبہ بنا رکھا ہے۔