.

القاعدہ نے یمن میں 15 فوجی یرغمال بنا لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے سیکیورٹی اور قبائلی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ ملک کے مغربی ضلع الحدیدہ میں شدت پسند تنظیم القاعدہ کے جنگجوئوں نے ایک فوجی کیمپ پر حملہ کرکے کم سے کم 13 فوجیوں کو ہلاک اور 15 یر غمال بنا لیا ہے۔

یمنی سیکیورٹی ذرائع نے خبر رساں ایجنسی’’اے ایف پی‘‘ کو بتایا کہ القاعدہ کے شدت پسندوں نے رات کی تاریکی میں بحر احمر کے کنارے واقع الحدیدہ شہر کے جبل قصبے میں قائم فوجی کیمپ پر دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں تیرہ فوجی ہلاک اور پندرہ یرغمال بنا لیے گئے۔ جوابی کارروائی میں تین حملہ آور بھی ہلاک ہوگئے تاہم عسکریت پسند کیمپ پر قبضے میں کامیاب رہے اور اخری اطلاعات تک کیمپ پرالقاعدہ کا قبضہ چھڑایا نہیں جا سکا۔

ایک مقامی قبائلی رہ نما نے بتایا کہ الحدیدہ میں فوجی کیمپ پرالقاعدہ کے حملے کے بعد فوج کی مزید نفری طلب کر لی گئی ہے جبکہ دوسری جانب کیمپ کا قبضٰہ چھڑانے اور یرغمال فوجیوں کی رہائی کے لیے مذاکرات بھی شروع ہو گئے ہیں۔ قبائلی ذریعے نے بتایا کہ مقامی قبائل القاعدہ کی تحویل میں موجود فوجیوں کی جان بچانے اور ان کی رہائی کے لیے ثالثی کی کوشش کر رہے ہیں۔

الحدیدہ سے قریب ہی ایب گورنری میں بھی القاعدہ کے جنگجو اپنے حریف شیعہ شدت پسند گروپ انصاراللہ کے ساتھ جھڑپوں کے بعد ان کے کئی ٹھکانوں پر قبضہ کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔