.

دہشت گردوں سے جھڑپ: دو سعودی سیکیورٹی اہلکار شہید

چھاپہ مار کارروائی کے دوران دو دہشت گرد بھی ہلاک ہوئے: منصور الترکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے علاقے القصیم کی بریدہ گورنری میں مشتبہ دہشت گردوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کے درمیان ہونے والے مقابلے میں دو دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔ اس کارروائی میں دو سیکیورٹی اہلکار بھی کام آئے۔

العربیہ نیوز نے اس کارروائی سے متعلق اپنے نشریئے میں سب سے پہلے خبر دی، جس کی بعد میں سعودی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے ایک بیان میں تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ منگل کے روز الاحساء گورنری کے الدالوہ قصبے میں شیعہ امام بارگاہ پر حملے پر نامعلوم مسلح نقاب پوشوں کی فائرنگ کے نتیجے میں سات افراد کی ہلاکت کے بعد حکام نے بڑے پیمانے پر تفتیش کا آغاز کیا تھا۔

منگل ہی کے روز ایک کارروائی میں چھے افراد کو الدالوہ واقعے میں ملوث ہونے کے شبے میں حراست میں لیا گیا تھا۔ اس سے تفتیش ے دوران ملنے والی معلومات کی روشنی میں سیکیورٹی اداروں نے بریدہ شہر کی المعلمین کالونی کے ایک مکان پر چھاپہ مارا تاکہ وہاں موجود مشبتہ افراد کو گرفتار کیا جا سکے۔

چھاپے کی اطلاع ملتے ہی مشتبہ افراد نے خود کو مکان کے اندر مورچہ زن کر لیا اور سیکیورٹی اہلکاروں پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی۔ سیکیورٹی اداروں کی جوابی کارروائی میں دو دہشت گرد مارے گئے جبکہ اول الذکر کی فائرنگ سے دو سیکیورٹی اہلکار بھی جام شہادت نوش کر گئے۔ آپریشن کے دوران زخمی ہونے والے اہلکاروں کو ہسپتال داخل کرا دیا گیا ہے۔

سیکیورٹی ترجمان نے بتایا کہ الاحساء فائرنگ کے سلسلے میں ملک کے مختلف حصوں میں کی جانے والی کارروائیوں میں ابتک چھ شہروں سے پندرہ مشتبہ افراد کو حراست میں لیا جا چکا ہے۔ ان میں چار بریدہ، دو البدائع جبکہ الاحساء، شقراء اور ریاض سے ایک ایک شخص کو حراست میں لیا گیا ہے۔ منگل کو الاحساء کے علاقے میں ایک چھاپے کے دوران چھ افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔