.

داعش مخالف جنگ میں مزید 6 فرانسیسی لڑاکا جیٹ شامل

شام میں لڑتے ہوئے 50 فرانسیسی شہری مارے گئے:وزیراعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس نے عراق میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے خلاف جنگ میں حصہ لینے کے لیے مزید چھے لڑاکا جیٹ بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔

فرانسیسی وزیردفاع ژاں وائی ویس ڈرائین نے بدھ کو پیرس میں پارلیمان کے اجلاس میں بتایا ہے کہ مزید چھے لڑاکا طیارے آیندہ ہفتے سے جنگ میں شامل ہوجائیں گے۔ انھوں نے بتایا ہے کہ اس وقت فرانس کے بارہ طیارے پہلے عراق میں داعش کے ٹھکانوں پر بمباری کررہے ہیں۔
انھوں نے مزید بتایا کہ چھے مزید میراج طیارے آیندہ سوموار سے عراق کے شمالی شہر کرکوک کے نزدیک داعش کے ٹھکانوں پر فضائی حملے شروع کردیں گے۔واضح رہے کہ فرانس کے لڑاکا طیارے اس وقت صرف عراق میں داعش پر فضائی حملے کررہے ہیں اور فرانس شام میں داعش مخالف جنگ میں شریک نہیں ہے۔

فرانسیسی جنگجو

درایں اثناء فرانسیسی وزیراعظم مینول والز نے بدھ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ قریباً پچاس فرانسیسی شہری شام میں جنگجوؤں کے ساتھ مل کر لڑتے ہوئے مارے جاچکے ہیں۔

انھوں نے پیرس کے شمال میں واقع علاقے بیوویس میں ایک سکیورٹی اجلاس کے بعد کہا کہ ''ہم جانتے ہیں،اس وقت ایک ہزار سے زیادہ فرانسیسی شہری اس لڑائی میں شریک ہیں''۔

انھوں نے کہا:''ہمیں اس بات پر کوئی حیرت نہیں ہے کہ فرانسیسی شہری یا فرانس کے مکین ان سیلوں میں شامل ہیں اوراس سفاکیت کا حصہ بن رہے ہیں۔اس سے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمارے عزم میں اضافہ ہی ہوا ہے''۔