.

امریکی یہودی ربی یروشلم میں کشیدگی ختم کرائیں گے

ساٹھ یہودی پیشواوں کا امریکا میں باہم تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ یروشلم میں اسرائیلی سکیورٹی فورسز اور فلسطینیوں کے درمیان ہونے والے بعض واقعات اور اسرائیلی حکومت کے تازہ فیصلوں کی وجہ سے پیدا شدہ کشیدگی کا توڑ کرنے کے لیے ساٹھ یہودی ربی اور مذہبی پیشواوں نے میدان میں اترنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ان یہودی رہنماوں نے واشنگٹن میں ہونے والی 2014 سمٹ میں شرکت کی ہے۔ اس موقع پر ان یہودی پیشواوں نے ایک یہودی عبادت گاہ پر حلال گوشت سے لذت کام و دہن کا اہتمام بھی کیا۔

یہودی پیشواوں نے باہمی تبادلہ خیال کے بعد ایسے منصوبوں میں شرکت کا فیصلہ کیا جن کا مقصد بے گھر افراد کے لیے وسائل فراہم کرنے کے علاوہ مسلمان اور یہودی نوجوانوں کے درمیان باسکٹ بال کے کھیل کا اہتمام بھی کیا جانا ہے۔

یہودی ربیوں کے ہاں یہ سوچ پائی جاتی ہے کہ عمومی طور پر سمجحا جاتا ہے کہ یروشلم میں پیدا شدہ صورت حال کی وجہ یہودیوں اور مسلمانوں کے درمیان ناقابل مفاہمت ماحول پایا جانا ہے۔ لیکن ربی اس کے باوجود امید کی کرن دیکھتے ہیں۔