داعش اور ترک انٹیلیجنس پورٹلز پر مصری ہیکرز کا حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصری ہیکرز نے شدت پسند تنظیم دولت اسلامی ’’داعش‘‘ اور ترکی کی انٹیلی جنسی ایجنسی سمیت کئی دوسرے ممالک اور تنظیموں کی ویب سائیٹس پر کامیاب حملے کر کے انہیں ہیک کر لیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق’’مصری الیکٹرانک فورسز‘‘ کے نام سے سرگرم ہیکرز کے ایک گروپ نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں دولت اسلامی کے زیر استعمال ویب سائٹ ہیک کرنے کے بعد ترکی کی انٹیلی جنس کی ویب سائٹ کو بھی ہیک کرلیا ہے۔ کئی دوسرے اداورں کی ویب سائیٹس بھی ان کے نشانے پر ہیں۔

خالد ابو بکر نامی ایک ہیکر نے’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو بتایا کہ مصری کی الیکٹرانک فوج نے دولت اسلامی داعش کے کئی سرکردہ لیڈروں کی ویب سائٹس میں گھس کر انہیں بند کر دیا ہے۔ ہیکرز نے بتایا کہ ان کے حملے میں داعش کی ریاست سیناء، الفرقان فائونڈیشن، اخوان انٹرنیشنل فائونڈیشن برائے اسلامی ورثہ، الھادف میڈیا گروپ سمیت کئی دوسری ویب سائیٹس کو بھی ہیک کر لیا گیا ہے۔

خالد ابو بکر نے بتایا کہ مصری ہیکرز نے ترک خبر رساں ایجنسی’’اناطولیہ‘‘ کی ویب سائیٹس بھی ہیک کر لی۔ اس کے علاوہ ہیکرز نے ترکی کی انٹیلی جنس ایجنسی کی ویب سائیٹس میں نقب لگا کر وہاں موجود 60 فی صد خفیہ معلومات چرا لیں۔

اتا ترک فائونڈیشن کی ویب سائٹ کو ہیک کرنے کے بعد اس کے صفحہ اول پر لگی کمال اتا ترک کی تصویر ہٹا کر اس کی جگہ کے فوجی صدر عبدالفتاح السیسی کی تصویر پوسٹ کر دی ابو بکر نے دعویٰ کیا کہ اس وقت مصر میں سائبر سپیس کی دنیا میں کام کرنے والے پیشہ ور ماہرین اور ہیکرز کی ایک پوری فوج موجود ہے جو کسی بھی ادارے یا شخص کی ذاتی ویب سائٹ کو ہیک کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں