دو نوجوان امریکی دہشت گردوں کے خلاف مقدمہ

ایک دہشت گرد سکول کا طالبعلم ہے۔ داعش سے وابستگی كا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے وفاقی پراسیکیوٹر کی طرف سے دو نوجوان امریکیوں پر الزام عاید کیا گیا ہے کہ ان کا عسکری تنظیم داعش کے ساتھ تعلق رہا ہے۔ مذکورہ امریکی شہری امریکی ریاست مینی سوٹا کے رہائشی ہیں۔

سرکاری ریکارڈ کے مطابق ان میں سے ایک صومالی نژاد امریکی کا نام عابدی نور اور عمر 20 سال ہے، جبکہ دوسرے امریکی عبداللہ یوسف کی عمر 18 سال ہے۔

اسسٹنٹ اٹارنی جنرل جان کریلین کے مطابق ان دونوں پر الزام ہے کہ انہوں نے غیر ملکی دہشت گرد گروپ داعش کو مادی طور پر مدد کی ہے۔

معلوم ہے کہ عابدی نور 29 مئی کو ترکی گیا تھا، جہاں بہت سے عسکریت پسند آگے شام میں گئے ہیں۔ اسے 16 جون کو واپس امریکا پہنچنا تھا لیکن وہ واپس نہ آیا۔

دوسرے امریکی نوجوان یوسف کو اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ سکول جا رہا تھا۔ مجسٹریٹ نے یوسف کو اگلی سماعت تک زیر حراست رکھنے کا حکم دیا ہے۔

واضح رہے عراق و شام میں عسکریت پسند جماعت داعش میں سولہ ہزار غیر ملکی عسکریت پسند شامل ہو چکے ہیں۔ جن میں سینکڑوں عسکریت پسندوں کا تعلق مغربی ممالک سے بتایا جاتا ہے۔

امریکی اسسٹنٹ اٹارنی جنرل نے کہا '' اس عالمی بحران سے نمٹنے کے لیے امریکی قیادت میں دنیا کے متعدد ملک سرگرم ہیں، اب تک ہم پندرہ سے زائد عسکریت پسندوں کے خلاد مقدمات دائر کر چکے ہیں۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں