شام میں عسکری تربیت پر دو برطانویوں کو جیل کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانیہ میں ایک فوجداری عدالت نے دو سگے بھائیوں کو شام میں عسکری تربیت لینے کے الزام میں جیل کی سزا سنائی ہے۔

انگلینڈ اور ویلز کی سنٹرل کریمنل کورٹ نے تیس سالہ محمود نواز اور چوبیس سالہ حمزہ نواز کو دہشت گردی کی تربیت لینے کے الزام میں قصور وار قرار دے کر بالترتیب ساڑھے چار سال اور تین سال قید کا حکم دیا ہے۔یہ پہلا مقدمہ ہے جس میں شام میں جاری خانہ جنگی میں شرکت کے الزام میں کسی برطانوی شہری کو سزا سنائی گئی ہے۔

ان دونوں بھائیوں کے موبائل فونز سے پولیس کو ایسی تصاویر ملی تھیں جن میں محمود نے آتشیں رائفل اے کے 47 اٹھا رکھی تھی اورفوجی وردی پہن رکھی تھی۔فون میں موجود ایک تصاویر میں تربیتی کیمپ کا روزانہ کا شیڈول بھی دیا گیا تھا۔اس میں اسلامی اسباق اور عسکری تربیت کے سیشنز کی تفصیل درج تھی۔

محمود اور حمزہ کو گذشتہ ستمبر میں برطانیہ کے بارڈر افسروں نے خانہ جنگی کا شکار شام سے لوٹنے کے بعد گرفتار کیا تھا۔انھوں نے تحقیقات کے دوران حکام کو بتایا تھا کہ وہ ''جندالشام'' نامی گروپ کی حمایت کرتے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں