.

بھارت نے 43 ممالک کے لیے ویزے کا اجرا آسان کر دیا

پاکستان ان خوش قسمت ملکوں کی فہرست میں شامل نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارتی حکومت نے ملک میں سیاحت کے فروغ کے لیے 43 ممالک کے شہریوں کے لیے ای ویزا سروس شروع کر کے ویزے کے طریقہ کار کو انتہائی سہل بنا دیا ہے۔ تاہم ان ممالک کی فہرست میں پاکستان شامل نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق جن ممالک کے لیے ای ویزا سروس شروع کی گئی ہے، ان میں جرمنی، امریکا اور آسٹریلیا بھی شامل ہیں۔ بھارتی حکومت کے مطابق اب ان ممالک کے شہریوں کو ویزا حاصل کرنے لیے متعلقہ بھارتی سفارت خانوں میں نہیں جانا پڑے گا بلکہ وہ اپنے سفر سے چار روز قبل تک ویزے کے لیے آن لائن فارم پُر کر سکتے ہیں۔

زیادہ تر ویزے مختلف ممالک میں موجود بھارتی سفارت خانوں کی جانب سے جاری کیے جاتے تھے۔ پیچیدہ طریقہ کار کے باعث بھارت جانے کے خواہشمند افراد کو ویزا حاصل کرنے کے لیے کئی ہفتوں تک انتظار کرنا پڑتا تھا۔

ای ویزا سروس سے فائدہ اٹھانے والے سیاحوں کو بھارت کے نو انٹرنیشنل ایئر پورٹس پر پہنچنے کی صورت میں ایک ماہ یعنی 30 دن کا ویزا دے دیا جائے گا۔ اس ویزے کی معیاد نہیں بڑھائی جا سکے گی۔ مزید یہ کہ سیاحوں کے پاس واپسی کا ٹکٹ ہونا بھی لازمی ہے۔

بھارتی وزیر سیاحت مہیش شرما کے مطابق، ’’یہ اسکیم بھارت کی پوری ٹورازم انڈسٹری کے لیے ایک طرح سے خواب سچ ہونے کے مترادف ہے۔ اس پیش رفت سے ملکی سیاحتی صنعت اور معیشت کو بے حد فائدہ پہنچے گا۔‘‘ ان کی طرف سے جاری ہونے والے بیان میں مزید کہا گیا ہے، ’’حکومت کا مقصد ملک میں سیاحت کو فروغ دینا ہے اور اس اسکیم کے باعث یہ واضح پیغام جائے گا کہ بھارت ملک میں سفر کو آسان بنانے کی جانب سنجیدہ ہے۔‘‘

یاد رہے کہ بھارت کی سابق کانگریس حکومت نے اس اسکیم کا اعلان رواں برس کے آغاز میں کیا تھا۔

جن ممالک کے لیے ای ویزا سروس شروع کی گی ہے ان میں برازیل، روس، فن لینڈ، ناروے، جنوبی کوریا، اسرائیل، جاپان، میانمار، عمان، فلسطین، سنگاپور، یو اے ای، یوکرائن اور تھائی لینڈ وغیرہ بھی شامل ہیں۔ جن ممالک کے لیے یہ سروس شروع کی گئی ہے ان میں بھارت کے پڑوسی ممالک پاکستان، بنگلہ دیش، چین اور نیپال وغیرہ شامل نہیں ہیں۔

بھارت کی جانب سے اب بھی قریب ایک درجن کے قریب ممالک کے شہریوں کو ’آن ارائیول‘ یا بھارت پہنچنے پر ویزا دے دیا جاتا ہے۔ بھارتی حکومت کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ای ویزا سروس کو بعد ازاں مزید ممالک کے لیے بھی شروع کیا جائے گا۔