.

تیونس:21 دسمبر کو حتمی صدارتی انتخاب

الباجی قائد السبسی اور موجودہ صدر منصف مرزوقی میں مقابلہ ہوگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس میں صدارتی انتخابات کے دوسرے اور حتمی مرحلے کے لیے پولنگ 21 دسمبر کو ہوگی۔پہلے مرحلے میں پہلے اور دوسرے نمبر پر رہنے والے امیدواروں موجودہ صدر منصف مرزوقی اور سیکولر جماعت ندا تیونس کے قائد الباجی قائد السبسی کے درمیان مقابلہ ہوگا۔

الیکشن کمیشن کے سربراہ شفیق سرسار نے سوموار کو دارالحکومت تیونس میں ایک نیوزکانفرنس کے دوران صدارتی انتخاب کے دوسرے مرحلے کے لیے پولنگ کی تاریخ میں تبدیلی کا اعلان کیا ہے۔اس سے قبل 28 دسمبر کو پولنگ کا اعلان کیا گیا تھا۔

انھوں نے بتایا کہ بیرون ملک مقیم تیونسی شہری 19 ،20 اور 21 دسمبر کو نئے صدر کے انتخاب کے لیے اپنا ووٹ ڈال سکیں گے۔دوسرے مرحلے کی پولنگ کے لیے صدارتی امیدواروں کی انتخابی مہم منگل 9 دسمبر سے شروع ہوگی اور یہ 19 دسمبر کی نصف شب کو ختم ہوجائے گی۔

انھوں نے صدارتی امیدواروں اور میڈیا پر زوردیا ہے کہ وہ اس تاریخی موقع کی اہمیت کے پیش نظر انتخابی مہم کے دوران قواعد وضوابط کی پاس داری کریں۔

صدارتی انتخاب کے لیے 23 نومبر کو منعقدہ پہلے مرحلے کی پولنگ میں موجودہ صدر منصف مرزوقی اور ان کے مدمقابل اٹھاسی سالہ بزرگ سیاست دان الباجی قائد السبسی میں سے کوئی بھی جیت کے لیے درکار پچاس فی صد ووٹ حاصل نہیں کرسکا تھا۔

الیکشن کمیشن نے آج سوموار ہی کو صدارتی انتخاب کے پہلے مرحلے کے حتمی نتائج کا اعلان کیا ہے۔ان کے مطابق السبسی 39.46 فی صد ووٹ لے کر پہلے نمبر پر رہے ہیں اور منصف مرزوقی نے 33.43 فی صد ووٹ حاصل کیے تھے۔

واضح رہے کہ تیونس کی 1956ء میں فرانس سے آزادی کے بعد یہ پہلے آزادانہ صدارتی انتخابات ہیں۔پہلے مرحلے میں اس تاریخی صدارتی انتخاب میں ستائیس امیدواروں نے حصہ لیا تھا اور سابق مطلق العنان صدر زین العابدین بن علی کی حکومت میں خدمات انجام دینے والے کئی سابق وزراء بھی قسمت آزمائی کررہے تھے لیکن وہ نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے میں ناکام رہے تھے۔تیونس کے قریباً تریپن لاکھ افراد صدارتی انتخاب میں ووٹ دینے کے اہل ہیں۔