.

گڑیوں سے کھیلنے کی عمر میں وحشی جانوروں سے دوستی

دس سالہ سعودی بچی بیڈ روم میں خونخوار جانور کے ساتھ سوتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دس سالہ سعودی لڑکی مضاوی العنزی کو اتنی کم عمری میں ایک انوکھا شوق چرایا ہے۔ گڑیوں سے کھیلنے کی عمر میں مضاوی کو اس وقت تک نیند نہیں آتی جب تک اس کے پہلو میں بھیڑیئے یا چیتے جیسا خونخوار جانور آرام نہ کر رہا ہو۔

ننھی مضاوی العنزی کو تیز پنچوں اور دانتوں والے خونخوار جانوروں کے ساتھ گھلنے ملنے کی خصوصی تربیت دی جا رہی ہے۔ یہ تربیت اسے کسی چڑیا گھر نہیں بلکہ خود اپنے بیڈ روم میں فراہم کی جا رہی ہے، جہاں وحشی جانور اس ننھی کلی کے دوست بن کر اس کے ساتھ رہتے ہیں۔ اس امر کا ثبوت العربیہ ڈاٹ نیٹ پر مضاوی العنزی کی خونخوار جانوروں کے ساتھ تصاویر ہیں۔ ایسی تصاویر کوئی چھوٹی عمر کا تو کیا کوئی بڑا بھی بنوانے کی جرات نہیں کر سکتا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے مضاوی نے کہا کہ انہیں خوانخوار اور مشکل سے سدھائے جانے والے والوں جانوروں کے ساتھ زندگی کرنے کی تربیت ان کے والد نے دی ہے جو خود بھی اس منفرد تجربے کو زندگی کا بنا چکے ہیں۔

مضاوی نے بتایا کہ وہ دو سالوں سے خونخوار جانوروں کے ساتھ رہنے کی تربیت حاصل کر رہی ہیں۔ اس کے پاس دو بچہ چیتے ہیں جن کی عمریں تین ماہ ہیں۔ نیز اس کے پاس ڈیڑھ برس کی عمر کا ایک بھیڑیا بھی ہے۔

'میں ان جانوروں کے ساتھ دوستانہ ماحول میں رہتی ہوں اور یہ جانور میری بات سمجھتے ہیں۔ میں اپنا فارغ وقت اپنے بیڈ روم میں ان جانوروں کے ساتھ گذارنے کو ترجیح دیتی ہوں، مجھے یہ سب اپنے ہم جماعت اور گھر کے فرد لگتے ہیں۔'

العنزی نے خبردار کیا کہ بچوں کو ایسے خطرناک جانوروں کے ہمراہ تربیت دلانے میں احتیاط کی ضرورت ہے کیونکہ بے احتیاطی سے یہ خونخوار جانور بچوں کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔