.

مردانہ بھیس بدل کر سعودی خاتون اسٹیڈیم میں داخل

نشاندہی پر پولیس نے حراست میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مکہ مکرمہ کی پولیس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ حکام نے شب جدہ کے جدید الجوہر اسٹیڈیم میں افریقی یونین اور الشباب فٹبال ٹیموں کے درمیان کھیل کے مقابلے کے دوران ایک خاتون کو مردانہ لباس میں حراست میں لیا ہے۔

مکہ پولیس ترجمان کیپٹن ڈاکٹر عاطی بن عطیہ القرشی نے بتایا کہ فٹبال اسٹیڈیم میں ایک خاتون کی موجودگی کے بارے میں شوشل میڈیا پر خبر چلی اور مردانہ لباس میں ملبوس ایک خاتون کی تصویر بھی سماجی میڈیا پرجاری کی گئی تھی۔ اسی دوران اسٹیدیم میں موجود پولیس کو بھی اس پر نظر پڑی جس کے بعد اسے حراست میں لے لیا گیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ مردانہ کھیل کے مقابلوں کے دوران کسی خاتون کا اور وہ بھی مردانہ بھیس بدل کر داخل ہونا قانون کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ خاتون نے چونکہ مکمل طور پر مردانہ سوانگ دھار رکھا تھا جس کے باعث اسٹیڈیم میں داخلے کے وقت اس کی شناخت نہیں ہو سکی۔ نیز اس نے اسٹیڈیم میں داخلے کے لیے ٹکٹ بھی قریب ہی ایک بکنگ پوائنٹ سے حاصل کیا تھا۔