.

''مسجد حرام توسیع: کوئی قدیمی قبرستان دریافت نہیں ہوا''

صفا سے ملنے والی ہڈیوں کا جائزہ لے رہے ہیں: مجلس انتظامی حرمین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مسجد حرام میں توسیع کے لیے جاری عظیم الشان منصوبے کے دوران کھدائی کرتے ہوئے سامنے آلی ہڈیوں کا جائزہ لیا جا رہا ہے تاہم اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ان ہڈیوں سے اس جگہ پر کسی قدیمی قبرستان کے ہونے کی نشاندہی ہوئی ہے۔

اس امر کا اظہار حرمین الشریفین کی مجلس انتظامی کی طرف سے کیا گیا ہے۔ مجلس انتظامی کی طرف سے کہا گیا ہے کہ چند روز پہلے صفا پہاڑی کے ساتھ کھدائی کے دوران ملنے والی ہڈیاں ہو سکتا ہے کسی جانور کی ہوں۔ تاہم اس بارے میں حتمی رائے ہڈیوں کے سائنٹفک تجزیے کے بعد ہی دی جائے گی۔

واضح رہے صفا کے نزدیک سے ملنے والی ان ہڈیوں کے حوالے سے سوشل میڈیا پر بھی ایک بحث شروع ہو گئی ہے۔ اس صورت حال کے پیش نظر ہڈیوں کا جائزہ لینے کے لیے ماہرین کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔

میڈیا رپورٹس اور سوشل میڈیا کے پر آنے والی تصاویر میں دکھایا گیا ہے کہ سکیورٹی حکام مسجد حرام کی توسیع کے لیے ایک کھدائی کر رہے ہیں تاکہ معلوم کیا جا سکے کہ یہ ان ہڈیوں کے علاوہ کوئی ایسی چیز تو نہیں ہے جو قدیمی قبرستان کی نشاندہی کرتی ہو۔

سعودی عرب کے محکمہ سیاحت و آثار قدیمہ کے کمشنر اس جگہ کو محفوظ کرنے میں سر گرم رہے ہیں۔ کمشنر سیاحت و آثار قدیمہ ان دنوں شاہ عبداللہ توسیعی منصوبے کا بھی حصہ ہیں۔

اس توسیعی منصوبے میں ایسی 71 جگہیں ہیں جن کی آثار قدیمہ کے ناطے اہمیت ہے ۔ کمشنر کا کہنا ہے ان کا آثار قدیمہ کے حوالے سارا کام اسلامی شریعت کے تابع ہے۔

سیاحت و آثار قدیمہ کے کمشنر کے مطابق حکومت اسلامی تاریخ کے آثار اور حوالوں کو بڑی ذمہ داری سے محفوظ کر رہی ہے۔ انہی میں قرآن مجید کی طباعت کے لیے قائم ادارہ بھی شامل ہے۔