.

"داعش نے شام میں اردن کا طیارہ نہیں گرایا"

امریکا نے جہاز گرنے کا سبب بتانے سے گریز کیا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے کہا ہے کہ اردن کا ایف سولہ جنگی طیارہ جو شام میں دولت اسلامیہ المعروف داعش کے زیر قبضہ علاقے میں گر کر تباہ ہو گیا ہے اسے دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے نہیں گرایا ہے۔

دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے طیارے کے پائلٹ فلائٹ لیفٹینٹ مواز یوسف کو گرفتار کرلیا ہے اور انٹرنیٹ پر اس کی تصاویر جاری کی ہیں۔ اس سے پہلے دولت اسلامیہ نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے اردن کے طیارے کو مار گرایا ہے۔

امریکا نے کہا ہے کہ واضح شہادتیں اس جانب واضح اشارہ کرتی ہیں کہ دولت اسلامیہ نے اردن کے طیارے کو نہیں گرایا۔ البتہ امریکا نے یہ واضح نہیں کیا کہ طیارہ کیسے گرا۔

اردن ان چار عرب ممالک میں سے ایک ہے جو امریکا کی سربراہی میں قائم ہونے والے اس فوجی اتحاد کا حصہ ہیں جو شام میں گذشتہ تین ماہ سے دولتِ اسلامیہ کے ٹھکانوں پر بمباری کر رہا ہے۔

اردن کا طیارہ رقہ کے قریب تباہ ہوا ہے۔ رقہ پر عراق اور شام میں سرگرم تنظیم دولتِ اسلامیہ کا کنٹرول ہے اور تنظیم کا دعویٰ ہے کہ اس نے اردنی فضائیہ کا جنگی طیارہ مار گرایا ہے اور پائلٹ ان کے قبضے میں ہے۔