ایران پڑوسی ملکوں کے لیے ویزہ ختم کرنے کے لیے پر عزم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے بعض پڑوسی ممالک کے سیاحوں کے لیے ویزہ کی شرط ختم کرنے کا عندیہ دیا ہے۔ ایرانی نائب وزیر خارجہ برائے سفارتی و پارلیمانی امور حسن قشقاوی کا کہنا ہے کہ تہران ایسے پڑوسی ملکوں کے لیے ویزے کی شرط ختم کرنے کے لیے تیار ہے جو ایرانی شہریوں کو اپنے ہاں بغیر ویزے کے داخلے کی اجازت دینے کی پالیسی اختیار کریں گے۔

خبر رساں ایجنسی’’ایرنا‘‘ کے مطابق قشقاوی کا کہنا تھا کہ حال ہی میں خلیجی ریاست کویت نے ایرانی سیاحوں کے لیے ویزے کی شرط ختم کی ہے۔ تہران بھی اس کے جواب میں کویتی سیاحوں کے لیے ویزہ پالیسی ختم کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کے سیاحتی جزیرے میں مکمل طور پر امن وامان قائم ہے اور پچھلے کئی سال سے وہاں پر کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔ بیرون ملک سے سیاح اس جزیرے کا رخ کر رہے ہیں۔

ایرانی عہدیدار کا کہنا تھا کہ مذہبی مواقع پر پڑوسی ممالک کے شہریوں کی ایران کے مقدس مقامات کی زیارت کے لیے ویزہ فری پالیسی شروع کی جا رہی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ شہری مذہبی مقامات پر حاضری دے سکیں۔

ادھر ایران کی ایک دوسری خبر رساں ایجنسی’’ایسنا‘‘ کے مطابق سلطنت آف عمان میں ایرانی سفیر علی اکبر سیبویہ کا کہنا ہے کہ مسقط اور تہران کے درمیان تجارتی تعلقات کے فروغ کے ساتھ دونوں ملک ایک دوسرے کے شہریوں کے لیے ویزہ فری پالیسی اختیار کرنے پر بات چیت کر رہے ہیں۔

مبصرین کا خیال ہے کہ ایران پڑوسی ملکوں کے ساتھ ویزہ پالیسی میں نرمی اس لیے کر رہا ہے تاکہ عالمی اقتصادی پابندیوں کے نتیجے میں معیشت کو پہنچنے والے نقصان کا سیاحت کے شعبے کے ذریعے تدارک کیا جا سکے۔ ایرانی حکومت کی جانب سے قم اور مشہد کے مذہبی مراکز کی زیارت کو پرکشش بنانے کے لیے دوسرے ممالک میں قائم ایرانی سفارت خانے بھی سرگرم ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں