جرمن اخبار پر توہین آمیز کارٹون شائع کرنے پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جرمنی کے شمالی شہر ہیمبرگ میں فرانسیسی طنزیہ اخبار چارلی ہیبڈو میں شائع شدہ توہین آمیز کارٹون دوبارہ شائع کرنے والے ایک اخبار کے دفتر پر اتوار کی صبح آتش گیر مادے سے حملہ کیا گیا ہے۔

جرمن پولیس کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ ''اخبار ہیمبرگر مورگن پوسٹ کے دفتر پر پتھراؤ کیا گیا اور ایک کھڑکی سے آتش گیر شے پھینکی گئی ہے جس سے نچلی منزل میں دو کمروں کو نقصان پہنچا ہے۔تاہم آگ پر فوری قابو پا لیا گیا تھا اور اس واقعے میں کوئی شخص زخمی نہیں ہوا ہے''۔

علاقائی روزنامے ہیمبرگر مورگن پوسٹ نے چارلی ہیبڈو پر پیرس میں بدھ کو حملے کے بعد پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کی توہین پر مبنی تین کارٹون دوبارہ شائع کیے تھے اور ساتھ یہ سرخی جمائی تھی:''اس آزادی کو ممکن بنایا جانا چاہیے''۔

پولیس نے بتایا ہے کہ اخبار کے دفتر پر گرینچ معیاری وقت کے مطابق قریباً 0120 (جی ایم ٹی) بجے کیا گیا تھا اور اس کے الزام میں دو مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے جبکہ اس واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔

پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ چارلی ہیبڈو کے کارٹونز کی دوبارہ اشاعت اور حملے کے درمیان تعلق تحقیقات میں بنیادی سوال ہے اور اس کے بارے میں فوری طور پر کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا۔پولیس نے مشتبہ افراد کے بارے میں مزید معلومات فراہم کرنے سے انکار کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں