''تیل کی قیمتیں گرانے والے پچھتائیں گے''

بحران سے ایران کے ساتھ دوسرے ممالک بھی متاثر ہوں گے:روحانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی صدر حسن روحانی نے خبردار کیا ہے کہ عالمی سطح پر تیل کی قیمتیں گرانے کے ذمے دار اپنے اس فیصلے پر پچھتائیں گے اور قیمتوں میں کمی کے اس بحران سے ایران کے ساتھ دوسرے ممالک بھی متاثر ہوں گے۔

حسن روحانی نے منگل کو سرکاری ٹیلی ویژن سے نشر کی گئی تقریر میں کہا ہے کہ ''جن لوگوں نے دوسرے ممالک کو نیچا دکھانے کے لیے تیل کی قیمتوں میں کمی کی منصوبہ بندی کی ہے ،انھیں اپنے اس فیصلے پر پچھتانا پڑے گا اور انھیں یہ بات جان لینی چاہیے کہ انھیں ایران سے زیادہ خمیازہ بھگتنا پڑے گا''۔

گذشتہ چند ماہ کے دوران عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی فی بیرل قیمت میں پچاس فی صد سے زیادہ کمی واقع ہوئی ہے اور یہ چھے سال پہلے والی سطح پر آچکی ہے۔اس وقت تیل کی فی بیرل قیمت پچاس ڈالرز سے بھی نیچے گرچکی ہے۔

درایں اثناء وینزویلا کے صدر نکولس مادورو منگل کو الجزائر پہنچے ہیں اور وہ الجزائری صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ سے تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں پر قابو پانے کے لیے مجوزہ حکمت عملی پر تبادلہ خیال کریں گے۔وینزویلا اور الجزائر تیل پیدا اور برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک کے رکن ہیں۔

الجزائر کی سرکاری خبررساں ایجنسی اے پی ایس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ''دونوں لیڈر تیل کی قیمتوں کے موجودہ بحران اور اس پر قابو پانے کے طریقوں پر بات چیت کرنے والے ہیں۔ وہ اس ضمن میں اوپیک کے غیر رکن ممالک سے رجوع کرنے سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کریں گے''۔

صدر مادورو اوپیک کے رکن ممالک کے دورے پر ہیں۔وہ الجزائر کے بعد سعودی عرب اور ایران بھی جائیں گے۔ توقع ہے کہ وہ ان دونوں ممالک کی قیادت سے تیل کی قیمتوں میں استحکام لانے کے لیے تیل کی پیداوار میں اضافے سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں