صدر ایردوآن کی توہین پر سابق مِس ترکی سے پوچھ تاچھ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی کی ایک ماڈل اور سابقہ ملکہ حسن سے استنبول کے ایک پراسیکیوٹر نے صدر رجب طیب ایردوآن کی مبینہ توہین پر مبنی نظم انسٹاگرام پر شئیر کرنے کے الزام میں پوچھ تاچھ کی ہے۔

ایک مقامی خبررساں ایجنسی چیہان کی رپورٹ کے مطابق سابق مِس ترکی مرو بیوک ساراچ نے ترکی کے قومی ترانے کے بعض بول لے کر ان سے ایک نظم بنائی تھی اور اس میں صدر ایردوآن کی براہ راست توہین کی گئی ہے۔مرو بیوک سنہ 2006ء میں مِس ترکی منتخب ہوئی تھیں۔

بیوک ساراچ نے استنبول کی عدالت میں موقف اختیار کیا ہے کہ ان کا صدر ایردوآن کی توہین کا کوئی ارادہ نہیں تھا۔انھوں نے عدالت کے روبرو بیان میں کہا کہ ''میں نے ''چیف کی نظم'' کے عنوان سے ازخود شاعری نہیں گھڑی تھی بلکہ اس کو اپنے اکاؤنٹ پر صرف شئیر کیا تھا کیونکہ یہ مجھے مزاحیہ لگی تھی۔میرا رجب طیب ایردوآن کی توہین کا ہرگز بھی کوئی ارادہ نہیں تھا''۔

اس ماڈل کا کہنا ہے کہ ''مجھے جب خبردار کیا گیا کہ میرے خلاف قانونی چارہ جوئی ہوسکتی ہے تو میں نے انسٹاگرام سے یہ نظم حذف کردی تھی''۔جب پراسیکیوٹر کے ترجمان سے اس معاملے پر بات کرنے کے لیے رابطہ کیا گیا تو انھوں کہا کہ وہ اس کیس پر فی الحال کوئی تبصرہ نہیں کرسکتے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں