.

لیبیا:نائب وزیرخارجہ مشرقی شہر بیضاء سے اغوا

مسلح افراد ہوٹل کے کمرے سے نائب وزیرخارجہ کو ساتھ لے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے مشرقی شہر البیضاء میں نامعلوم مسلح افراد نے ملک کے نائب وزیرخارجہ کو اغوا کر لیا ہے۔

ایک سکیورٹی ذریعے نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا ہے کہ مسلح افراد نائب وزیر خارجہ حسن الصغیر کو اتوار کی صبح ان کے ہوٹل کے کمرے سے اغوا کرکے اپنے ساتھ لے گئے ہیں۔انھوں نے ہوٹل کے عملے کو یہ کَہ کر اپنا تعارف کرایا تھا کہ وہ سکیورٹی فورسز کے اہلکار ہیں۔وہ کسی نامعلوم مقام کی جانب گئے ہیں۔

فوری طور پر کسی گروپ نے ان کے اغوا کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔واضح رہے کہ دارالحکومت طرابلس سے بارہ سو کلومیٹر مشرق میں واقع شہر بیضاء میں لیبیا کی بین الاقوامی سطح پر تسلیم کی جانے والی وزیراعظم عبداللہ الثنی کی حکومت نے اپنے دفاتر قائم کررکھے ہیں اور اس کے عہدے دار اس شہر میں ہوٹلوں یا نجی رہائش گاہوں میں مقیم ہیں۔پہلے اس حکومت اور اس کی حامی پارلیمان مصر کی سرحد کے نزدیک واقع شہر طبرق میں اپنے اجلاس منعقد کرتی رہی تھی۔

طرابلس میں اس کے متحارب اسلامی جنگجوگروپوں پر مشتمل گروپ فجر لیبیا کی حکومت قائم ہے اور ملک کے مغربی شہروں میں اس کی عمل داری ہے۔ان دونوں متوازی حکومتوں کی حامی ملیشیاؤں اور جنگجو گروپوں کے درمیان بن غازی اور ملک کے دوسرے شہروں میں گذشتہ سال اگست سے خونریز لڑائی جاری ہے۔انھوں نے گذشتہ ہفتے جنیوا میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں مذاکرات میں جنگ بندی اور قومی اتحاد کی حکومت کے قیام سے اتفاق کیا تھا لیکن بن غازی میں دوبارہ لڑائی چھڑ جانے کے بعد اب مذاکراتی عمل تعطل کا شکار ہوچکا ہے۔