.

تیونس: النہضہ کا حکومت کو اعتماد کا ووٹ نہ دینے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس میں پارلیمنٹ میں دوسری بڑی سیاسی جماعت تحریک النہضہ نے نو منتخب وزیر اعظم الحبیب الصید کو اعتماد کا ووٹ نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے اور کہا کہ الصید کی حکومت قوم کی نمائندہ نہیں ہے۔ اس لیے تحریک النہضہ ان کے ساتھ تعاون نہیں کرے گی۔

خیال رہے کہ تیونس میں نو منتخب وزیر اعظم الحبیب الصید نے گذشتہ جمعہ کو نئی کابینہ تشکیل دینے کا اعلان کیا تھا۔ الصید سابق مفرور صدر زین العابدین بن علی کے دور حکومت میں اہم عہدوں پر کام کر چکے ہیں۔ انہوں نے قومی حکومت کی تشکیل کا اعلان کیا مگر اس میں تحریک النہضہ کے کسی رکن کو شامل کرنے کا عندیہ نہیں دیا ہے۔

یاد رہے کہ تیونس کی سیکولر جماعت ندائے تیونس نے گذشتہ برس نومبر میں ہونے والے انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل کی تھی۔ انتخابات میں ملک کی اعتدال پسند مذہبی سیاسی جماعت تحریک النہضہ کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔