"ایرانی پارلیمنٹ کے 170 ارکان کرپشن میں ملوث "

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران کے سابق نائب صدر محمد رضا رحیمی نے دعویٰ‌ ہے کہ سابق صدر محمود احمدی نژاد کے دور حکومت میں 170 ارکان پارلیمنٹ قومی خزانے کی لوٹ مار اور کرپشن میں ملوث تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سابق صدر مسٹر رحیمی، جو خود بھی کرپشن ہی کے الزام میں اس وقت پانچ سال قید کی سزا کا سامنا کر رہے ہیں، نے سابق صدر احمدی نژاد کے نام ایک مکتوب میں ارکان شوریٰ کی کرپشن کا دعویٰ کیا ہے۔ انہوں ‌نے یہ مکتوب احمدی نژاد ی جانب سے جاری ہونے والے اس بیان کے بعد بھیجا گیا ہے جس میں انہوں ‌نے خود کو کرپشن کے الزامات سے بری الذمہ قرار دیا تھا۔ تاہم نائب صدر نے اس کے جواب میں ‌لکھا ہے کہ ان کے دور حکومت میں سنہ 2005ء ‌سے 2013ء تک 170 ارکان پالیمنٹ نے بھی قومی خزانے میں لوٹ مار کی۔ انہوں نے سابق صدر کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ "کیا آپ حقیقت سے واقف نہیں یا دانستہ طور پر اس معاملے کو نظر انداز کر رہے ہیں"۔

سابق صدر نے محمود احمدی نژاد پر کڑی تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ کرپشن کیس میں آپ میرا دفاع کرنے اور میرے حق میں گواہی دینے کے بجائے میرے کیس میں خود کو بری قرار دینے کی کوشش کر رہے ہیں، حالانکہ آپ کو علم ہونا چاہیے کہ آپ کی حکومت کے دور میں دو سو کے قریب ارکان پارلیمنٹ نے کرپشن کی تھی۔

قبل ازیں سابق صدر کا ایک بیان بھی سامنے آیا تھا جس میں ان کا کہنا تھا کہ رضا رحیمی کے کرپشن کیسز کا مجھ سے کوئی تعلق نہیں۔ کرپشن کا تعلق انہیں صدر بنانے کے بعد کے دور سے نہیں بلکہ اس سے قبل کا ہے۔ میرے دور حکومت میں ان کی کرپشن کا کوئی واقعہ موجود نہیں‌ ہے۔ اگر ہے بھی تو میں اس سے بری الذمہ ہوں۔

درایں اثناء ایرانی پارلیمنٹ کے مختلف پارلیمانی دھڑوں کے درمیان کرپشن کیسز کے معاملے میں اختلافات سامنے آئے ہیں جس کے بعد کرپشن میں ملوث ارکان کے احتساب کے مطالبے پر مبنی یاداشت پر دستخط کرانے کی مہم روک دی گئی ہے۔ تاہم ارکان نے اسپیکر پارلیمنٹ علی لاریجانی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سابق صدر کے اعلان کے بعد ان ارکان پارلیمنٹ کو سامنے لائیں جو کرپشن میں ملوث رہے ہیں۔

خیال رہے کی ایران کے انٹیلی جنس وزیر محمود علوی نے گذشتہ دسمبر میں انکشاف کیا تھا کہ سابق حکومت کے 20 اہم افسروں کو کرپشن کے الزام کے تحت حراست میں ‌لیا گیا ہے۔ حال ہی میں ایران کی ایک عدالت نے سابق نائب صدر علی رضا رحیمی کو بھی مالی بدعنوانی کے الزامات کے تحت پانچ سال اور اکانوے دن کی قید کی سزا سنائی ہے۔ مسٹر رحیمی اسوقت جیل میں ہیں۔ عدالت کا فیصلہ آنے سے قبل انہیں رہا کرنے کا اعلان کیا گیا تھا تاہم عدلتی فیصلے کے بعد ان کی رہائی روک دی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں